صوبہ کی مختلف یونیورسٹیوں کے طلبہ و طالبات کے وفد کا لاہور رعجائب گھر کادورہ

لاہورعجائب گھر  کا قیام 1865-1866 ء میں لایا ملکہ وکٹوریہ کی1887ء میں گولڈن جوبلی کی تقریب میں  لاہورعجائب گھر کے لئے فنڈ ریزنگ کی تقریب کا اانعقاد ہوا طلباء کویہاں رکھے نوادرات کی تاریخی ا ہمیت بارے آگاہی دی گئی عجائب گھر میں ہرشعبہ کا آفیسر اپنی فیلڈ کا ماہر ریسرچ آفیسر تعینات ہے

 صوبہ کی مختلف یونیورسٹیوں کے طلبہ و طالبات کے وفد کا لاہور رعجائب گھر کادورہ

لاہور :محکمہ تعلقات عامہ پنجاب لاہورمیں کوئین میری کالج،نمل یونیورسٹی اور یونیو رسٹی آف سنٹرل پنجاب کے انٹر ن شپ کے لئے آئے طلبہ وطالبات نے لاہور میوزیم کا مطالعا تی دورہ کیا۔اس موقع پر ایڈیشنل ڈائریکٹر نو شابہ انجم نے ریسرچ آفیسر احتشام چوہدری کے ہمراہ طلبہ و طالبات کو لاہور میوزیم کا وزٹ کرایا اوریہاں رکھے نوادرات کی ہسٹری بارے آگاہی دی۔عجائب گھر کی تاریخ کے بارے بتایا گیا کہ  اس کا قیام 1865-1866 ء میں لایا گیا۔عجائب گھر کے نزدیک واقع ٹولنٹن مارکیٹ کوبرٹش دور 1864 ء  میں نمائش گاہ کے طور پر استعمال میں لایا گیا۔ملکہ وکٹوریہ کی1887ء میں گولڈن جوبلی کی تقریب میں عجائب گھر کے لئے فنڈ ریزنگ کی تقریب کا اانعقاد ہوا۔

طلباء کو بتا یا گیا کہ میو زیم کے سٹریکچر کو مغلیہ طرز پر ڈھالا گیا ہے۔عجائب گھر کے ہرشعبہ کا اپنی فیلڈ کا ماہر ریسرچ آفیسر تعینات ہے۔ میوزیم میں قدیم دور کے سکے،نوادرات،جواہرات،مغلیہ دور کے فن پارے،جنگی سامان غیرہ  بارے معلومات دی گئیں۔دنیا بھر اور پاکستان کے ڈاک کے ٹکٹوں بارے بھی مفصل معلومات دیتے ہوئے بتایا گیا کہ یہ خزانہ دنیابھر کی ثقافت،مذہبی تہوار،عالمی شخصیات،کھیلوں اور موسمیاتی کیفیت بارے معلومات فراہم کرتا ہے۔گندھارا اور دیگر قدیم تہذیبیں ہمار قدیم اثاثہ ہیں۔