لاہور:وزیر خزانہ پنجاب کی زیر صدارت ریسورس موبلائزیشن کمیٹی برائے مالی سال2021-22کا ساتواں اجلاس

جس میں صوبائی وزیر برائے آبپاشی محسن لغاری، صوبائی وزیر برائے زراعت حسین جہانیاں گردیزی، صوبائی وزیر برائے ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن حافظ ممتاز احمد، سیکرٹری فنانس افتخار ساہو، چیئرمین پنجاب ریونیو اتھارٹی زین العابدین ساہی، ممبر ٹیکس بورڈ آف ریونیو۔ سیکرٹری ایری گیشن اور سیکرٹری ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن اور متعلقہ افسران نے شرکت کی

لاہور:وزیر خزانہ پنجاب کی زیر صدارت ریسورس موبلائزیشن کمیٹی برائے مالی سال2021-22کا ساتواں اجلاس

لاہور: وزیر خزانہ پنجاب مخدوم ہاشم جواں بخت کی زیر صدارت ریسورس موبلائزیشن کمیٹی برائے مالی سال2021-22کا ساتواں اجلاس آج محکمہ خزانہ کے کمیٹی روم میں منعقد ہوا جس میں صوبائی وزیر برائے آبپاشی محسن لغاری، صوبائی وزیر برائے زراعت حسین جہانیاں گردیزی، صوبائی وزیر برائے ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن حافظ ممتاز احمد، سیکرٹری فنانس افتخار ساہو، چیئرمین پنجاب ریونیو اتھارٹی زین العابدین ساہی، ممبر ٹیکس بورڈ آف ریونیو۔ سیکرٹری ایری گیشن اور سیکرٹری ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن اور متعلقہ افسران نے شرکت کی۔

اجلاس کا مقصد آئندہ مالی سال کے بجٹ کی تیاری سے قبل صوبائی وسائل میں اضافے کے لیے محکمہ آبپاشی اور بورڈ آف ریونیو کی تجاویز کا جائزہ لینا تھا۔ بورڈ آف ریونیو  کی جانب سے پنجاب کے مختلف اضلاع میں بورڈ آف ریونیو پنجاب  اور ایف  بی آر کے تحت کی جانے والی وصولیوں کی تفصیلات بیان کی گئیں اورایگریکلچر انکم ٹیکس کی وصولیوں میں بہتری کے لیے تجاویز پیش کی گئیں۔محکمہ ایری گیشن کی جانب سے ایری گیشن کے ملکیتی اثاثوں کے موثر استعمال، ای آبیانہ سسٹم کے اجراء ا ور آبیانے کی شرح پر نظر ثانی کی تجاویز پیش کی گئیں۔ اجلاس میں بورڈ آف ریونیو کے تحت سرکاری اراضی کے استعمال کے لیے مجوزہ پالیسی کا بھی جائزہ لیا گیا۔

اس موقع پر اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے صوبائی وزیر نے کہا کہ سرکاری اراضی کے منفعت بخش استعمال کے لیے موثر پالیسی وقت کی اہم ضرورت ہے۔ محکمہ آبپاشی کی سیلابی و نہری زمینوں سمیت دیگر اثاثوں کے استعمال کے لیے بھی موزوں شرائط اور قوائد و ضوابط وضع کیے جائیں گے۔ صوبے میں آبیانے کا جدید نظام متعارف کروائیں گے۔ آبیانے کی مد میں کی جانے والی وصولیاں زرعی پانی کے ناجائز استعمال اور چوری کو روکنے،پائپ لائنز کی تعمیر و مرمت اور نگرانی کے لیے استعمال کی جائیں گی۔