صوبائی حکومت کی ترجیحات میں امن، مذہبی ہم آہنگی اور رواداری کو فروغ دیناشامل ہے: اعجاز عالم آگسٹین

نفرت انگیز بیانات کو روکنے کےلئے حالیہ مہم کو وزیراعلیٰ پنجا ب نے بھی سراہا ہے ، مہم کی کامیابی میںفلاحی تنظیموں بالخصوص وائی ڈی ایف کا کردار قابل تحسین رہا ہے صوبائی وزیر انسانی حقوق

صوبائی حکومت کی ترجیحات میں امن، مذہبی ہم آہنگی اور رواداری کو فروغ دیناشامل ہے: اعجاز عالم آگسٹین

لاہور : صوبائی وزیر برائے انسانی حقوق واقلیتی امور و بین المذاہب ہم آہنگی اعجاز عالم آگسٹین نے کہا ہے کہ پنجاب حکومت کی اولین ترجیحات میں امن،مذہبی ہم آہنگی اور رواداری کو فروغ دینا شامل ہے جبکہ تحریک انصاف کی حکومت میں پاکستان بھر میں پر امن ماحول کےلئے تمام ممکنہ اقدامات کئے جا رہے ہیں تاہم اس کے لئے تمام اسٹیک ہولدرز کو ملکر ساتھ چلنا ہوگا۔انہوں نے کہاکہ ملک بھر میں مبینہ طور پر -COVID19کے پھیلاﺅ کے حوالے سے مختلف گروہوں کی جانب سے بے بنیاد نفرت انگیز /منفی بیانات کو روکنے کے لئے فلاحی اداروں کا کردار قابل تحسین رہا ہے بالخصوص یوتھ ڈیویلپمنٹ فاﺅنڈیشن کی خصوصی میڈیا مہم کو اسپاٹ لائٹ رپورٹ کی صورت میں وزیراعلیٰ پنجاب کو پیش کیا گیا ، جس کو وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے خوب سراہا اور مستقبل میں پر امن معاشرے کی تشکیل کے لئے اپنی بھرپور معاونت کو یقین دلایا ۔

ان خیالات کا اظہار صوبائی وزیر نے انسانی حقوق کے کیمپ آفس میں فلاحی تنظیموں کے نمائندگان سے ایک ملاقات کے دوران کیا۔ چیف ایگزیکٹو یوتھ ڈیویلپمنٹ فاﺅنڈیشن شاہد رحمت نے تمام شرکاءکو دوران بریفنگ بتایا کہ نفرتوں کو ختم کرنے کے عنوان سے خصوصی مہم کو وزارت انسانی حقوق کے تعاون سے لاہور، اوکاڑہ، ملتان، ڈی جی خان اور بہاولپور میں چلایا گیا جبکہ مختلف پیغامات کی صورت میں ویڈیوذکو مختلف ٹی وی چینلز، ریڈیو چینلز، کیبل ٹیلی ویژن نیٹ ورکس اور سوشل میڈیا کے پلیٹ فارم پر نشر کیا گیا ۔ ان میں مختلف فرقوں اور مذاہب سے تعلق رکھنے والی اہم مذہبی شخصیات کے پیغامات ریکارڈ کیے گئے ، جن میں علامہ راغب نعیمی، علامہ طاہر اشرفی، علامہ محمد اکبر حسین، علامہ عبد الخیر آزاد، بشپ سبیسچئین شاہ، علی اکبر ناطق اور دیگر شامل تھے۔

صوبائی وزیر اعجاز عالم آگسٹین نے شرکاءکو بتایا کہ وزیراعلیٰ پنجاب نے حالیہ ملاقات میں بتایا کہ انہوں نے بل بورڈز، بینرز اور اسٹریمز والے پیغامات کو ذاتی طور پر دیکھا ہے اور یقینی طور پر ان پر درج پیغامات کورونا وائرس کے پھیلاو سے متعلق الزام تراشی کی حوصلہ شکنی کرتے ہیں جبکہ اور نفرت کو ختم کرنے کے لئے سازگار ثابت ہو سکیں گے۔