بھارت جان لے کہ کشمیریوں کا حق خود ارادیت کسی طور دبایا نہیں جا سکتا : صوبائی وزیر انسانی حقوق

کشمیری عوام کو پورے ایک سال سے بد ترین لاک ڈاﺅن کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے: اعجاز عالم آگسٹین

بھارت جان لے کہ کشمیریوں کا حق خود ارادیت کسی طور دبایا نہیں جا سکتا : صوبائی وزیر انسانی حقوق

لاہور: صوبائی وزیر انسانی حقوق اعجاز عالم آگسٹین نے مقبوضہ کشمیر میں جاری بد ترین لاک ڈاﺅن کے ایک سال مکمل ہونے پر اپنے جاری کردہ ایک بیان میں کہا ہے کہ -19 COVID کے باعث کچھ ماہ ہی پوری دنیا میں لاک ڈاﺅن کا لفظ دیکھنے میں آیا مگر کشمیری عوام کو پورے ایک سال سے بد ترین لاک ڈاﺅن کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے جو کہ انسانیت کی بد ترین خلاف ورزی کی گھناﺅنی مثال ہے کیونکہ اس لاک ڈاﺅن کی وجہ کورونا نہیں بلکہ بھارتی حکومت کی ہٹ دھرمی ہے کیونکہ گزشتہ ایک سال سے کشمیری عوام ہر طرح کی بنیادی سہولت سے محروم ہے ۔ انہوں نے کہاکہ بھارت کی جانب سے اقوام متحدہ کونسل کی قرارداد کی کھلم کھلا خلاف ورزی ہو رہی ہے اور دنیا کے ایک ایک کونے سے کشمیر ی عوام کی حمایت کی آوازیں بلند ہورہی ہیں۔

صوبائی وزیر نے کہا کہ جب سے تحریک انصاف کی حکومت آئی ہے تب سے وزیراعظم پاکستان عمران خان نے صحیح معنوں میں کشمیری عوام کا مقدمہ ہر فورم پر اٹھایا ہے جسکودیکھتے ہوئے 5 اگست 2019 کو مودی حکومت نے کشمیرکی خصوصی حیثیت کو ختم کرنے کی مذموم کوششیں شروع کیں اور تب سے کشمیری عوام کو بد ترین لاک ڈاﺅ ن کا سامنا کرنا پڑرہا ہے مگر یہ ایک اٹل حقیقت ہے کہ کشمیری عوام کا حق خود ارادیت کسی صورت دبایا نہیں جا سکتا کیوکہ ظلم بڑھتا بڑھتا ایک دن ختم ہوجاتا ہے ۔صوبائی وزیر نے اس بات پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ حالیہ برس جون کے مہینے میں متعدد معصوم کشمیریوں کو نام نہاد سرچ آپریشن کے نام پر شہید کردیا گیا جبکہ مشرقی لداخ میں ہندوستانی اور چینی فوجیوں کے مابین موجودہ تنازعہ سے علاقائی تناو میں اضافہ بڑھتا جا رہا ہے ۔

بھارت میں پچھلے 12 مہینوں میں جو کچھ ہوا وہ واقعی تشویش ناک ہے جبکہ بھارت میں رہنے والے مسلمان باشندوں کی قومیت یاشہریت کو ختم کرنے کی کوشش پر بھی بھرپور مزاحمت کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے اور مودی حکومت کو دنیا بھر میں نفرت کی آنکھ سے دیکھا جارہا ہے ۔انہوں نے واضح کیاکہ مودی حکومت کی عوام مخالف پالیسیاں اور کشمیر میں بڑھتے ظلم کی وجہ سے خطے میں امن کو شدید خطرہ ہے تاہم اگر مودی حکومت نے ہوش کے ناخن نہ لیئے تو وہ دن دور نہیں جب بھارت کے اندر سے ہی ایسا انقلاب اٹھے گا کہ نظام کو تہس نہس کرکے رکھ دیگا جبکہ کشمیری عوام کی قربانیاں رائیگاں نہیں جائیں گی اور بہت جلد کشمیر میں بھی آزادی کا سورج طلوع ہوگا۔