صوبائی وزیرانسانی حقوق اعجاز عالم کی خواتین پر تشدد کی روک تھام سے متعلق سیمینار میں شرکت

سیمینار کا انعقاد لیبر ایجوکیشن فاؤنڈیشن کیجانب سے ایک نجی ہوٹل میں کیا گیا حکومت پنجاب خواتین کو تمام بنیادی سہولیات کی فراہمی کے لئے پرعزم ہے: اعجاز عالم آگسٹین

صوبائی وزیرانسانی حقوق اعجاز عالم کی خواتین پر تشدد کی روک تھام سے متعلق سیمینار میں شرکت

لاہور: صوبائی وزیر برائے انسانی حقوق واقلیتی امور اعجا ز عالم آگسٹین نے کہا ہے کہ حکومت پنجاب خواتین کو تمام بنیادی سہولیات کی فراہمی کے لئے پرعزم ہے اور خواتین کو بااختیار بنانے کے پیکج میں حکومت پنجاب کے مختلف اقدامات کے بارے میں ایک جامع پالیسی شامل ہے جبکہ خواتین پر تشدد کی روک تھام کے حوالے سے حکومت پنجاب اپنے فرائض منصبی بخوبی نبھا رہی ہے تاہم خواتین کو تعلیم، پیشہ ورانہ تربیت کے ساتھ معاشرتی مدد فراہم کرکے خواتین کے خلاف تشدد جیسے عنصر کو ختم کیا جاسکتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ حکومت پنجاب کے محکمہ لیبر اینڈ ہیومن ریسورس نے پنجاب ڈومیسٹک ورکرز ایکٹ 2019 کے سیکشن 20 کے تحت گھریلو ملازمین کی رجسٹریشن شروع کردی ہے تاکہ ملازمتوں کو مستقل کرکے ایک مناسب اجرت، معاشرتی تحفظ، پیشہ ورانہ تربیت فراہم کرکے استحصال کے خاتمے کو یقینی بنایا جاسکے۔ان خیالات کا اظہار صوبائی وزیر نے گزشتہ روز خواتین پر تشدد کی روک تھام کے حوالے سے منعقدہ ایک سیمینار میں کیا،سیمینار کا انعقاد لیبر ایجوکیشن فاؤنڈیشن نے لاہور کے ایک نجی ہوٹل میں کیا۔ خالد محمود، ڈائریکٹر لیبر ایجوکیشن فاؤنڈیشن نے شرکا کا خیرمقدم کیا اور حکومت پنجاب کی جانب سے خواتین کے تحفظ کے لئے اٹھائے گئے اقدامات کو سراہتے ہوئے کہا کہ امتیازی سلوک اور تشدد کے روکنے کے ساتھ خواتین کو بااختیار بنانے کے لئے ہم سب کو ملکر اقدامات کرنا ہوں گے تاکہ خواتین بھی معاشرے کا مفید رکن بن کر ملک و قوم کی تعمیر و ترقی میں اپنا کلیدی کردار ادا کر سکیں۔

دوسرے شرکاء نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ بلا شبہ تحریک انصاف کے دور حکومت میں خواتین کو بااختیار بنانے کے حوالے سے تسلی بخش کام ہو رہا ہے تاہم خواتین کے حقوق کے تحفظ اوران کے خلاف تشدد کی روک تھام کیلئے ابھی بہت سے عملی اقدامات کرنا وقت کی ضرورت ہیں۔تمام مقررین نے پنجاب ڈومیسٹک ورکرز ایکٹ 2019 کو نافذ کرنے پر حکومت پنجاب کی تعریف کی اور ڈیمانڈ کی کہ حکومت کو چاہئے کہ وہ گھریلو ملازمین پر بھی قانون بنائے۔

صوبائی  وزیر اعجازعالم آگسٹین نے اپنے خطاب کے دوران کہا کہ پنجاب اسمبلی میں خواتین کے حقوق کے تحفظ اور ان کے خلاف تشدد کو روکنے کے لئے موثر قانون سازی کی جارہی ہے جبکہ صوبائی وزیر نے شرکا کو آگاہ کیا کہ گھریلو ملازمین کی رجسٹریشن سے ان کی ملازمتوں کو باقاعدہ بنایا جاسکے گا اور یہی وزیراعظم پاکستان عمران خان کے وژن کی عکاسی بھی کرتا ہے کہ زیادہ سے زیادہ لوگوں کو روزگار فراہم کرنے کے اقدامات یقینی بنائے جائیں۔ سیمینار میں ایگزیکٹو ڈائریکٹر ڈیموکریٹک کمیشن فار ہیومن ڈیویلپمنٹ،ہیڈ آف بزنس ڈیویلپمنٹ اینڈ ایکسٹرنل ریلیشن،ڈائریکٹر ہیڈ کوارٹر لیبر اینڈ ہیومن ریسورس ڈیپارٹمنٹ،ڈائریکٹر پنجاب کمیشن برائے خواتین وحید اقبال،ڈپٹی سیکرٹری وومن ڈیویلپمنٹ ڈیپارٹمنٹ محمد نجیب،ڈپٹی ڈائریکٹر نیشنل کمیشن برائے انسانی حقو ق زنیرہ نذر چوہدری اور دیگر متعلقہ افراد نے کثیر تعداد میں شرکت کی۔