صوبے میں کورونا وائرس کی روک تھام کے حوالے سے چیف سیکرٹری پنجاب جواد رفیق ملک کی زیر صدارت اجلاس

ایڈیشنل چیف سیکرٹری داخلہ، سیکرٹری سپیشلائزڈ ہیلتھ، کمشنر لاہور، سی سی پی او لاہور ماہرین صحت پروفیسر محمود شوکت، پروفیسر جاوید حیات، پروفیسر اسد اسلم خان، ڈاکٹر تعزین ضیاء کی شرکت

  صوبے میں کورونا وائرس کی روک تھام کے حوالے سے چیف سیکرٹری پنجاب جواد رفیق ملک کی زیر صدارت اجلاس

لاہور : صوبے میں کورونا وائرس کے شدید بیمار مریضوں پر ایکٹمرا میڈیسن   کے کلینیکل ٹرائل کے جائزے کیلئے کابینہ کمیٹی کی ہدایات کے مطابق چیف سیکرٹری پنجاب جواد رفیق ملک کی زیر صدارت ایک اہم اجلاس  کیمپ آفس میں منعقد ہوا۔ ایڈیشنل چیف سیکرٹری داخلہ مومن آغا، سیکرٹری سپیشلائزڈ ہیلتھ کیئر نبیل اعوان، کمشنر لاہور سیف انجم، سی سی پی او لاہور ذوالفقار حمید، کورونا ایکسپرٹ ایڈوائز ری گروپ کے چیئرمین پروفیسر محمود شوکت،ممبر پروفیسر جاوید حیات،سی ای او میو ہسپتال پروفیسر اسد اسلم خان،ڈائریکٹر پنجاب کڈنی اینڈ لیور انسٹیٹیوٹ (پی کے ایل آئی) ڈاکٹر تعزین ضیاء اور متعلقہ افسران نے اجلاس میں شرکت کی۔

ماہرین صحت نے چیف سیکرٹری کو بتایا کہ ایکٹمرا میڈیسن کا ابتدائی ٹرائل پی کے ایل آئی، میو اور سروسز ہسپتال میں کیا گیا ہے اور اسکے مثبت نتائج برآمد ہوئے ہیں جن کامختلف زاویوں سے جائزہ لیا جا رہا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ یہ میڈیسن صرف اور صرف ڈاکٹروں کی ایڈوائس پر مخصوص علامات والے شدید بیمار مریضوں کو دی جا سکے گی جبکہ کورونا کے عام مریضوں کو اسکے استعمال کی قطعی اجازت نہیں ہو گی۔

ماہرین نے مزید بتایا کے اس دوا کے استعمال بارے سفارشات کابینہ کمیٹی کو پیش کی جائیں گی اور حتمی منظوری کے بعد ڈاکٹروں کی ایڈوائس پر مخصوص علامات والے کورونامریضوں کو دی جا سکے گی۔ چیف سیکرٹری نے کہا کہ کلینیکل ٹرائل کیلئے ماہرین کو ہر قسم کا تعاون فراہم کیا جائے گا۔ اجلاس میں کورونا وائرس کی صورتحال اور اسکی روک تھام کیلئے ایس او پیز پر عملدرآمد کا تفصیلی جائزہ لیا گیا۔ چیف سیکرٹری نے تمام انتظامی اور پولیس افسران کو ہدایات جاری کیں کہ بازاروں اور تجارتی مراکز میں احتیاطی تدابیر پر عملدر آمد ہر صورت یقینی بنایا جائے اور اس سلسلے میں کوئی نرمی اختیار نہ کریں کیونکہ عوام کی صحت اور قیمتی انسانی جانوں کا تحفظ ہماری اولین ذمہ داری ہے۔

چیف سیکرٹری نے عوام سے اپیل کرتے ہوئے کہا کہ ایس او پیز پر عملدرآمد کے سلسلے میں انتظامیہ اور قانون نافذ کرنے والے اداروں سے بھرپور تعاون کریں تاکہ اس مہلک وبا پر قابو پانے میں مدد مل سکے۔