وزیراعلیٰ عثمان بزدار کی پی ڈی ایم اے ہیڈ آفس آمد، ڈیش بورڈ پر مختلف شہروں میں صورتحال کا لائیو مشاہدہ

ٹڈی دل صورتحال کی مسلسل مانیٹرنگ جاری ہے، 28 لاکھ ایکڑ رقبہ ٹڈی دل سے صاف کرایا جا چکا ہے،بریفنگ

وزیراعلیٰ عثمان بزدار کی پی ڈی ایم اے ہیڈ آفس آمد، ڈیش بورڈ پر مختلف شہروں میں صورتحال کا لائیو مشاہدہ

لاہور: وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار چھٹی کے روز پراونشل ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی کے ہیڈ آفس پہنچ گئے اور پی ڈی ایم اے کے کنٹرول روم کے مانیٹرنگ سسٹم کا جائزہ لیا اور ڈیش بورڈ پر مختلف شہروں میں صورتحال کا لائیو مشاہدہ کیا۔ ووزیراعلیٰ کو پی ڈی ایم اے سینٹرل کنٹرول روم میں ٹڈی دل، کورونا صورتحال، انصاف ا مداد پروگرام اور فلڈ پر بریفنگ دی گئی۔سینئر ممبر بورڈ آف ریونیو نے بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ بلوچستان اور دیگر صوبوں سے ممکنہ طور پر آنے والے ٹڈی دل کی مسلسل مانیٹرنگ کی جا رہی ہے۔

بارکھان، ڈیرہ بگتی، ڈیرہ مراد جمالی اور کشمور میں ٹڈی دل کے جھنڈ دکھائی دے رہے ہیں۔ صوبہ بھر میں 28 لاکھ ایکڑ رقبہ ٹڈی دل سے صاف کرایا جا چکا ہے۔ بریفنگ میں بتایا گیا کہ مقامی طور پر تیارکردہ وہیکل ماؤنٹڈ مسٹ مشین کی لاگت 10 گنا کم اور کارکردگی بہترین ہے۔وزیراعلیٰ عثمان بزدارنے مقامی وسائل سے تیار کردہ وہیکل ماؤنٹڈ مسٹ مشین میں دلچسپی کا اظہار کیا۔ ڈائریکٹر جنرل پی ڈی ایم اے نے بتایا کہ پی ڈی ایم اے کنٹرول روم میں صوبہ کے ہر شہر میں کورونا سے پیدا ہونے والی صورتحال کی لمحہ بہ لمحہ مانیٹرنگ کی جا رہی ہے۔

اضلاع اور تمام محکموں کو سوا آٹھ لاکھ حفاظتی گاؤن، سوا سات لاکھ این 95 ماسک اور دیگر طبی سامان فراہم کیا جا چکا ہے۔ سپرے مشینیں، تھرمل گنز، فیس شیلڈ، گاگل اور دیگر حفاظتی سامان بھی فراہم کیا جاچکا ہے۔ماہرین پر مشتمل پی ڈی ایم اے کی سب کمیٹی نے پرسنل پروٹیکشن ایکوئپمنٹ کا سٹینڈرڈ ڈیزائن تیار کر لیا ہے۔ پی ڈی ایم اے نے ڈویژنل ہیڈکوارٹر اور اضلاع کو کورونا سے نمٹنے کیلئے 2 ارب 27 کروڑ روپے کے فنڈز بروقت فراہم کئے۔اضلاع میں ریونیو فیلڈ سٹاف کے ذریعے بیرون ملک سے آنے والے شہریوں کی نشاندہی کی جا رہی ہے۔

بیرون ملک سے آنے والے شہریوں اور ان کے اہل خانہ کے ٹیسٹ وغیرہ بھی کئے جاتے ہیں۔ پی ڈی ایم اے نجی اداروں اور مخیر حضرات سے ضروری سامان اور فنڈز متعلقہ محکموں کو فراہم کر رہی ہے۔احساس کفالت پروگرام کے ذریعے امداد کی فراہمی کے 2 مرحلے کامیابی سے مکمل ہو چکے ہیں۔پنجاب پہلی مرتبہ اپنے مرتب کردہ ڈیٹا بینک کے ذریعے انصاف امداد پروگرام شروع کر رہا ہے۔وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے سیلاب کی آمد سے پہلے تمام تر تیاریاں اور فلڈ پلان مکمل کرنے کی ہدایت کی اور کہا کہ پنجاب ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی چیلنجز کا مقابلہ کرنے کیلئے قابل قدر کارکردگی کا مظاہرہ کر رہی ہے۔

صوبے کی تاریخ میں پہلی مرتبہ اپنے ڈیٹا بینک کے ذریعے شفاف طریقے سے امداد فراہم کی جائے گی اور کوئی بھی شخص گھر بیٹھے ایک میسج کرکے شفاف طریقے سے مالی امداد حاصل کر سکتا ہے۔انصاف امداد پروگرام کے بعد رمضان پیکج بھی شروع کیا جائے گا۔ہوم قرنطینہ کے ذریعے وفاقی حکومت کے اشتراک سے ایس او پیز مرتب کئے جا رہے ہیں۔ عثمان بزدار نے کہا کہ مختلف شہروں میں جا کر کورونا، ٹڈی دل، گندم خریداری مہم، رمضان پیکج سمیت دیگر پروگراموں کا جائزہ لے رہے ہیں۔وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے صوبائی وزیر میاں خالد کی سفارش پر پی ڈی ایم اے ملازمین کیلئے ایک ماہ کی اضافی تنخواہ کی منظوری بھی دے دی۔

قبل ازیں پی ڈی ایم اے ہیڈکوارٹر پہنچنے پر نیسلے کے ہیڈ آف کارپوریٹ وقار احمد نے ایک کروڑ روپے امدادی چیک کا فنڈ پیش کیا۔ وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے اس موقع پر کہا کہ کورونا جیسی وباء اور آفات سے نمٹنے کیلئے نجی اداروں کا تعاون قابل تحسین ہے۔کارپوریٹ سیکٹر عوام کی فلاح و بہبود کیلئے اپنا بھرپور کردار ادا کرے۔صوبائی وزیر میاں خالد، سینئر ممبر بورڈ آف ریونیو، ڈی جی پی ڈی ایم اے، سیکرٹری اطلاعات اور دیگر متعلقہ حکام بھی اس موقع پر موجود تھے۔