سو سے زائد ممالک کا ویکسین پیٹنٹ کو عارضی طور پر معطل کرنے پر زور

سو سے زائد ممالک کا ویکسین پیٹنٹ کو عارضی طور پر معطل کرنے پر زور

دنیا کے سو سے زائد ممالک نے کورونا ویکسین کے پیٹنٹ کو عارضی طور پر معطل کرنے پر زور دیا ہے۔

پیٹنٹ حقوق کے خاتمے سے غریب ممالک کو ویکسین تک رسائی ممکن ہوگی اور زیادہ سے زیادہ کمپنیاں کوویڈ ویکسین کرسکیں گی۔امریکی صدر نے کورونا ویکسین کے پیٹنٹ حقوق کے خاتمے کی حمایت کا اعلان کرتے ہوئے کہا تھا کہ دنیا بھر کے لیے کورونا ویکسینز کے پیٹنٹ حقوق کے خاتمے کی حمایت کرتے ہیں۔اس پر عالمی ادارہ صحت کےسربراہ ٹیڈروس ادہانوم گیبریسیس نےامریکی فیصلے کو تاریخی قرار دیا اور کہاکہ امریکی فیصلہ کورونا وبا کےخلاف فیصلہ کن لمحہ ہے۔اس سےقبل یورپی یونین نےکہاتھاوہ امریکی تجویزپربات چیت کے لیے تیار ہے، جینیوا کی بین الاقوامی فارما سیوٹیکل مینوفیکچررز فیڈریشن اور ایسوسی ایشن لابی نے کہا کہ پیٹنٹ ختم کرنا ایک پیچیدہ مشکل کا آسان لیکن غلط حل ہے۔دوسری جانب جرمنی نےکورونا ویکسین کےپیٹنٹ حقوق کےخاتمےکی تجویزکی مخالفت کی ہے۔