پاکستان گرلز گائیڈ ایسوسی ایشن ملک بھر کی بچیوں کو بہترین تربیت فراہم کرکے انہیں معاشرے کا مفیدشہری بنانے کے لئے اقدامات کررہی ہے، تعلیم و تربیت کے ساتھ ساتھ بچوں کی کردار سازی بھی ضروری ہے، بیگم ثمینہ علوی

پاکستان گرلز گائیڈ ایسوسی ایشن ملک بھر کی بچیوں کو بہترین تربیت فراہم کرکے انہیں معاشرے کا مفیدشہری بنانے کے لئے اقدامات کررہی ہے، تعلیم و تربیت کے ساتھ ساتھ بچوں کی کردار سازی بھی ضروری ہے، بیگم ثمینہ علوی

مری :صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی کی اہلیہ بیگم ثمینہ عارف علوی نے کہا ہے کہ پاکستان گرلز گائیڈ ایسوسی ایشن ملک بھر کی بچیوں کو بہترین تربیت فراہم کرکے انہیں معاشرے کا مفیدشہری بنانے کے لئے اقدامات کررہی ہے، بچوں کی تعلیم وتربیت کے ساتھ ساتھ ان کی کردار سازی بھی ضروری ہے، صحتمند اور تربیت یافتہ خاتون نہ صرف گھر بلکہ ملکی ترقی میں اہم کردار ادا کرتی ہے۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے پاکستان گرلز گائیڈ ایسوسی ایشن کے زیر اہتمام نیشنل سمر کیمپ کی اختتامی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ کامیاب سمر کیمپ کے انعقاد پر منتظمین کو مبارکباد پیش کرتی ہوں۔

کیمپ میں شریک طالبات کا عزم اور روشن چہرے بانی پاکستان کے اس خواب کی تعبیر ہے جوا نہوں نے قیام پاکستان کے لئے دیکھا تھا۔ گرلز گائیڈ کو اس کیمپ سے اپنی صلاحیتوں کو نکھارنے اور ایک دوسرے سے سیکھنے کاموقع ملا ہے۔

انہوں نے کہاکہ گرلز گائیڈ کے عالمی اراکین کی تعداد ایک کروڑ سے زائد ہے۔ اس تاریخ کاحصہ بننے کامقصد معاشرے میں خواتین کے تعمیری کردار کو فروغ دینا ہے۔ یہ تحریک خواتین اور بچیوں کو شہری کی حیثیت سے ان کی صلاحیتوںکو فروغ دینے کے لئے پلیٹ فارم مہیا کرتا ہے۔ ان کی ہنر مندی ، تعلیم سمیت دیگر شعبوں میں صلاحیتوں کو اجاگرکرنے اور نکھارنے کا موقع ملتا ہے۔ ان کی جسمانی صحت اور تندرستی کے ساتھ ساتھ ان کے اندر اعتماد اور آگے بڑھنے کا جذبہ پیدا ہوتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ گرلز گائیڈ کی یہ تحریک نوجوان لڑکیوں کو صحت مند اور فعال رکھنے میں اہم کردارادا کررہی ہے۔ یہ تحریک لڑکیوں کو ہنگامی صورتحال سے نمٹنے اور سماجی برائیوں کی روک تھام کے حوالے سے تربیت فراہم کرتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ چھاتی کا کینسر ایک موزی مرض ہے جو پوری دنیا کا مسئلہ بن چکی ہے۔

انہوں نے کیمپ میں شامل لڑکیوں پر زور دیا کہ وہ کمیونٹی میں جاکر چھاتی میں کینسر سے متعلق آگاہی پھیلانے میں اپنا کردار ادا کریں۔ 18 سال سے زائد عمر کی لڑکیاں خود تشخیصی پر عمل کریں کیونکہ بروقت تشخیص سے جانیں بچائیں جاسکتی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ معاشرے کے معذور افراد ہماری توجہ کے منتظر ہیں۔ ان کو اپنے ساتھ شامل کریں اور معاشرے میں ان کے بارے میں احساس پیدا کرنے میں اپنا کردارا دا کریں ۔ ایسے بچوں کو الگ تھلگ نہ رکھیں، اپنے ساتھ ملائیں ، ان کی مدد کریں۔ مذاق مت اٹھائیں، اپنے ساتھ تعلیم دیں۔ حکومت معذور افراد کو تعلیم سمیت تمام شعبوں میں سہولیات کی فراہمی کے لئے کوشاں ہے۔ ہم ملک میں مل کر تبدیلی لا سکتے ہیں۔

انہوں نے کہاکہ خواتین معاشرے کااہم ستون ہیں۔ گرلز گائیڈ کورس کے ساتھ ساتھ قدرتی آفات میں اپنا فرض اداکرتی ہیں۔ متاثرین کو امداد کی فراہمی اور بحالی میں اہم کردار ادا کرتی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ بچوں کی تعلیم کے ساتھ ساتھ ان کی تربیت اور کردار سازی ضروری ہے۔ عملی میدان میں رہنمائی اور تربیت سے ہی کامیابی ممکن ہے۔ تعلیم کے ساتھ ساتھ غیر نصابی سرگرمیاں ذہنی و جسمانی بہتری کے ساتھ ساتھ کردار سازی میں اہم کردار ادا کرتی ہیں اور انہیں معاشرے کاکارآمد شہری بنا تی ہیں۔

سماجی کردار سازی قومی کی تعمیر کی ضامن ہے اور یہ معاشرے میں اعلیٰ روایات کو پروان چڑھانے میں مدد دیتی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ گرلز گائیڈ کو مزید فعال بنایا جائے تاکہ وہ زیادہ سے زیادہ لڑکیوں کو تربیت دے جو کہ ملک و قوم کی ترقی میں اہم کردار ادا کرسکے۔ انہوں نے کہا کہ ہم اسلامی اقدار پر عمل پیرا ہیں۔ اس تحریک میں انقلابی اقدامات کی ضرورت ہے۔ نوجوان خواتین کو شمولیت کے لئے راغب کیاجائے۔ نئی رکنیت سازی کی جائے۔ انہوں نے کیمپ میں شامل لڑکیوں پر زور دیا کہ وہ سٹریٹ چلڈرن اور چائلڈ پروٹیکشن پر کام کریں ۔

انہوں نے جو تربیت یہاں سے حاصل کی ہے اس سے اپنے اہل خانہ اور معاشرے کو بھی آگاہی دیں۔ پاکستان گرلز گائیڈ ایسوسی ایشن کی جانب سے یکم اگست سے 10 اگست تک گھوڑا گلی مری میں سینئر گائیڈ اور ینگ لیڈر کے لئے نیشنل سمر کیمپ کا انعقاد کیا گیا ۔