صوبائی وزیر اوقاف سید سعید الحسن شاہ کا دربار حضرت عنایت شاہ قادری رحمتہ اللہ علیہ کے 295ویں سالانہ عرس مبارک کی تقریبات کا افتتاح 

صوبائی وزیر اوقاف سید سعید الحسن شاہ کا دربار حضرت عنایت شاہ قادری رحمتہ اللہ علیہ کے 295ویں سالانہ عرس مبارک کی تقریبات کا افتتاح 

لاہور : صوبائی وزیر اوقاف سید سعید الحسن شاہ نے حضرت عنایت شاہ قادری رحمتہ اللہ علیہ کے 295ویں سالانہ عرس مبارک کی تقریبات کا افتتاح دربار پر رسم چادر پوشی سے کیا۔اس موقع پرمحمد عامر جان سیکرٹری،چیف ایڈمنسٹریٹر اوقاف پنجاب اورڈاکٹر طاہر رضابخاری ڈائریکٹر جنرل مذہبی امور اوقاف پنجاب کے علاوہ زونل ایڈمنسٹریٹر اوقاف لاہور،منیجر اوقاف سرکل نمبر2لاہور دیگر مشائخ و عظام اور زائرین کی کثیر تعداد شرکت نے شرکت کی۔ انہوں نے مزار اقدس پر چارر پوشی کے بعد ملک کی تعمیریر و ترقی اور مقبوضہ کشمیر کی آزادی اور دنیا بھر کے مسلمانوں کی سلامتی کے لئے خصوصی دعا کی۔

انہوں نے اپنے خطاب میں کہا کہ  حضرت عنایت شاہ قادری رحمتہ اللہ علیہ  کی تعلیمات اور افکار سے لاکھوں لوگ آج بھی فیض اٹھا رہے ہیں اور رہتی دنیا تک ان کا فیض جاری رہے گا۔انہوں نے کہا کہ تصوف کے ذریعے ہی دین اسلام پھیلا اور اب ان کی درگاہوں سے بھی مخلوق خدا اپنی پیاس بجا رہی ہے۔  اس کے اطراف میں سکیورٹی و دیگر انتظامات کے حوالے سے دورہ کیا۔ا نہوں نے محکمہ کے تمام افسران و اہلکاران کو سختی سے پابند کیا کہ عرس کے تینوں روز کسی بھی قسم کی کوتاہی یا شکایت نہ ہونے پائے۔ انہوں نے دربار میں ملکی و غیر ملکی زائرین کی مدد کیلئے بنائے گئے مختلف پوائنٹس کا بھی دورہ کیا۔ انہوں نے قوال حضرات کو دی جانے والی سہولیات کا جائزہ لیا۔

انہوں نے کہا کہ دربار سے ملحقہ آبادی میں چیکنگ کا سلسلہ باقاعدہ جاری رکھنے کی ہدایت بھی کی۔ زائرین کوتمام اطرف سے واک تھرو گیٹس کے ذریعے زائرین کودربار تک پہنچنے کی رسائی دی جا رہی ہے۔ دربار اور اس کے گرد وجوار میں سی سی ٹی وی کیمروں ذریعے اور قانون نافذ کرنے والے ادارے باقاعدگی سے تمام ہوٹلوں،گھروں اور شہریوں کی چیکنگ کا عمل جاری رکھے ہوئے ہیں۔ انہوں نے مزیدکہا کہ  حضرت عنایت شاہ قادری رحمتہ اللہ علیہ   اور اس خطے کے دیگر صوفیاء کی تعلیمات سے اکتسابِ فیض وقت کی اہم ضرورت ہے۔ یہ صوفیاء امن کے علمبردار اور انسان دوستی کے امین ہیں۔ ان کی خانقاہیں بلا امتیاز مسلک ومذہب ہر ایک کے لیے فیضِ عام کا ذریعہ ہیں۔

ان کے مزارات امن کے مرکز اور محبتوں والفتوں کے امین ہیں۔ ان کی درگاہیں علم کے سب سے بڑے مراکز اور تزکیہ وطہارت کے عظیم ترین مسکن ہیں۔ آج دنیامیں انتہاپسندی اور دہشت گردی کے خاتمہ اور روادارانہ فلاحی معاشرے کی تشکیل کے لیے صوفیاء کی تعلیمات پر عمل پیرا ہونا ہوگا۔ ہم سب ان کی تعلیمات پر خود بھی عمل کریں اور انہیں عام لوگوں تک بھی پہنچائیں تاکہ ملک سے دہشت گردی،انتہاپسندی اور فرقہ پرستی کا خاتمہ ہو سکے۔محکمہ کی جانب سے مورخہ 10فروری2021بعد از نماز عشاء محفل سماع /نعت خوانی کا اہتمام بھی کیا جائے گا۔ محکمہ اوقاف نے دربار شریف پر آنے والے زائرین کی سکیورٹی اورلنگر کے خصوصی انتظامات کیے ہیں او ر87 ہزارروپے کی گرانٹ مختص کی  ہے۔