بھٹہ ایسوسی ایشن پنجاب کے وفد کی ڈی جی تحفظ ماحولیات تنویر وڑائچ سے اہم ملاقات

ایسوسی ایشن کی کورونا وائرس کی بناء پر بھٹوں کی بندش کی تاریخ آگے بڑھانے کی اپیل  آپ کے تمام تر جائز تحفظات اعلیٰ حکام تک پہنچائیں گے۔ڈی جی ماحولیات کی یقین دہانی  

بھٹہ ایسوسی ایشن پنجاب کے وفد کی ڈی جی تحفظ ماحولیات تنویر وڑائچ سے اہم ملاقات

لاہور :ڈی جی تحفظ ماحولیات پنجاب تنویر احمد وڑائچ کی سربراہی میں محکمہ ماحولیات کے کمیٹی روم میں بھٹہ ایسوسی ایشن کے نمائندگان کے ساتھ ایک اہم اجلاس منعقد ہوا۔اجلاس میں بھٹہ ایسوسی ایشن کے صدر شعیب خان نیازی اور جنرل سیکرٹری مہر عبدالحق نے خصوصی طور پر شرکت کی۔اجلاس میں کورونا وائرس کے وباء کی وجہ سے بھٹہ مالکان کو درپیش مشکلات کا تفصیلی جائزہ لیا گیا، بھٹہ ایسوسی ایشن کے عہدیداران نے ڈی جی ماحولیات کو بتایا کہ کورونا کی وجہ سے کاروبار زندگی مفلوج ہو کر رہ گیا ہے اور ملک میں ایک غیر یقینی کی صورتحال کا سامنا ہے تاہم بھٹہ انڈسٹریز کا کام بہت بری طرح متاثر ہونے کی وجہ سے لاکھوں اینٹیں بھٹوں پر بیکار پڑی ہیں جبکہ خریدار نظر ہی نہیں آرہے۔

عہدیداران نے ڈی جی ماحولیات سے اپیل کی کہ صوبہ بھر میں بھٹوں کو حکومت کی طرف سے 30جون تک زگ زیگ ٹیکنالوجی یا دوست ماحول ٹیکنالوجی پر منتقلی کی دی گئی حتمی تاریخ کوکم از کم 2ماہ تک آگے بڑھا یا جائے تاکہ جسطرح حکومت وقت کی طرف سے ہر کاروباری طبقے کو خصوصی ریلیف دیا جارہا ہے،ایسے ہی بھٹہ انڈسٹریز کو بھی نوازا جائے اور آسان قرضوں کی صورت میں لڑ کھڑاتی انڈسٹری کو پھر سے اپنے پاؤں پر کھڑے ہونے میں بھی مدد کی جائے۔

ڈائریکٹر جنرل ماحولیات تنویر ورائچ نے ایسوسی ایشن کی ماحولیاتی آلودگی کو کنٹرول کرنے میں تعاون کرنے کی تعریف کرتے ہوئے کہاکہ اس بات سے بخوبی آگاہ ہیں کہ کورونا کی وجہ سے تمام کاروباری طبقہ بری طرح متاثر ہوا ہے تاہم آپ بھٹوں کی بندش کی حتمی تاریخ کو آگے بڑھانے کے بارے کے حوالے سے آپ لوگوں کے تما م تر جائز تحفظات اعلیٰ حکام تک ضرور پہنچائیں گے جبکہ حکومت پنجاب کی طرف سے آسان قرضوں کی سہولت کو یقینی بنانے کیلئے اقدامات یقینی بنائے جا رہے ہیں تاہم کورونا وائرس کی وجہ سے حکومتی اقدامات تاخیر کا باعث بن رہے ہیں مگر بھٹہ انڈسٹری یقین رکھے کہ بہت جلد تمام تر قانونی تقاضوں کی تکمیل کے بعد انڈسٹری کو آسان قرضوں کی فراہمی یقینی بنا رہے ہیں تاکہ بھٹہ انڈسٹری کی داد رسی بھی ممکن ہو سکے۔انہوں نے مزید کہاکہ بھٹوں وغیرہ کی بندش یا روزگار ختم کرنا مقصد نہیں بلکہ خواہاں ہیں کہ زگ زیگ ٹیکنالوجی پر منتقلی یقینی بنائی جائے تاکہ ماحول کا سازگار بنایا جاسکے۔