شفافیت اور کارکردگی میں بہتری کیلئے سسٹم کو کمپیوٹر آئز کر رہے ہیں:انصر مجید خان

دوران کارطبعی موت کی صورت میں بھی سوشل سیکورٹی سکیم کے تحت ملنے والی سہولیات دینے کی تجویز تعمیراتی صنعت سے وابستہ مزدوروں کو سوشل سیکورٹی کی سہولیات فراہم کرنے کیلئے میکانزم بنایا جا رہا ہے: صوبائی وزیر محنت

شفافیت اور کارکردگی میں بہتری کیلئے سسٹم کو کمپیوٹر آئز کر رہے ہیں:انصر مجید خان

لاہور: صوبائی وزیر محنت انصر مجید خان کی زیر صدارت سوشل سیکورٹی ہیڈآفس میں ادارہ کی کارکردگی کا جائزہ لینے کیلئے اجلاس منعقد ہوا۔ وائس کمشنر پنجاب سوشل سیکورٹی خالد محمود ملہیٰ صوبائی وزیر کو محکمہ کی کارکردگی کے حوالے سے بریفنگ دی، صوبائی وزیر محنت کو سوشل سیکورٹی کنٹری بیوشن، نئے اداروں کی رجسٹریشن، ادویات اور میڈیکل آلات کی خریداری، سوشل سیکورٹی کے آٹو میشن پروگرام پراب تک ہونے والی کارکردگی بارے تفصیلی بریفنگ دی گئی۔ صوبائی وزیر نے متعلقہ حکام کو ہدایات دیتے ہوئے کہا کہ کسی بھی وجہ سے دوران کار وفات کی صورت میں کارکن کے اہل خانہ کو سوشل سیکورٹی سکیم کے تحت ملنے والی سہولیات دینے کا پلان تیار کیا جائے۔

فیکٹری کی حدود میں قدرتی موت کی صورت میں بھی ورکر ز کے اہل خانہ کو مراعات دینے کیلئے قانون میں ضروری ترمیم لا ئی جائے۔ ریسٹورنٹ، دکانوں اور فیکٹریز میں کام کرنے والے غیر رجسٹرڈ ورکرز کو فوری رجسٹر کیا جائے۔ خاص طور پر بھٹہ میں کام کرنے والے مزدوروں کو سوشل سیکورٹی سکیم میں لانے کیلئے تمام وسائل بروئے کار لائے جائیں۔ صوبائی وزیر نے کہا کہ سوشل سیکورٹی آٹو میشن پروگرام میں پنجاب بھر کے چیمبر آف کامرس کو آگاہی فراہم کی جائے۔ تمام سٹیک ہولڈرز کی تجاویز کے مطابق آٹو میشن پروگرام کو آگے بڑھایا جائے۔ بعدازاں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے صوبائی وزیر نے بتایا کہ انہوں نے کہا کہ تعمیراتی صنعت سے وابستہ مزدوروں کو سوشل سیکورٹی کی سہولیات فراہم کرنے کیلئے میکانزم بنایا جا رہا ہے۔

مزدوروں کی تعداد کے تناسب سے کنٹری بیوشن کے بجائے ٹھیکہ کی مالیت سے بھی کنٹری بیوشن لینے کی تجویز بھی زیر غور ہے۔ 2018 تک ڈیتھ گرانٹ، میرج گرانٹ اور سکالر شپس کے تمام کیسسز نمٹائے۔ لیبر ڈیپارٹمنٹ کو کمپیوٹرائزڈ کیا جا رہا ہے۔ کیونکہ آٹو میشن سے محکمہ کی کارکردگی میں بہتری آئے گی۔ آئی ٹی کے متعدد پراجیکٹ جاری ہیں۔ صوبائی وزیر محنت انصر مجید خان نے کہا کہ ہسپتالوں کی پرفارمنس چیک کرنے کیلئے آن لائن مینجمنٹ سسٹم قائم کیا ہے۔ ہیلتھ کمپلینٹ مینجمنٹ سسٹم سے مریض اپنی شکایات درج کروا سکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کم سے کم اجرت کی ادائیگی یقینی بنانے کیلئے موبائل فون کے ذریعے تنخواہ منتقل کرنے کی تجویز زیر غور ہے۔ اجلاس میں میڈیکل ایڈوائزر ڈاکٹر ناصر جمال پاشا، ڈائریکٹر جنرل ہیڈکوارٹر مظفر محسن، ڈائریکٹر جنرل (سی اینڈ بی) بابر عباس، ڈائریکٹر ریفارمز ڈاکٹر فاطمہ عاصم،آئی ٹی کنسلٹنٹ راحیل اشرف، ڈائریکٹر پرچیز مریم منیر اور ڈائریکٹر (آئی سی ٹی) عرفان لطیف اور دیگرافسران شریک تھے۔