سینئر ممبر بورڈ آف ریونیو/ریلیف کمشنر بابر حیات تارڈ کی زیر صدارت آج پنجاب ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی میں اہم اجلاس

جس میں ڈائریکٹر جنرل پنجاب ڈیزاسٹر مینجمنٹ یونٹ راجہ خرم شہزاد عمر، ڈائریکٹر آپریشن نثار احمد ثانی، ڈائریکٹر پی ڈی ایم اے طارق فاروقہ شریک ہوئے جبکہ تمام اضلاع سے ڈپٹی کمشنرز نے آن لائن لنک شرکت کی۔ اجلاس کا مقصد مون سون کے دوران بارشوں سے ہونے والے نقصانات کے ازالے کے لیے لائحہ عمل کی تیاری تھا

سینئر ممبر بورڈ آف ریونیو/ریلیف کمشنر بابر حیات تارڈ کی زیر صدارت آج پنجاب ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی میں اہم اجلاس

لاہور: سینئر ممبر بورڈ آف ریونیو/ ریلیف کمشنر بابر حیات تارڈ کی زیر صدارت آج پنجاب ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی میں اہم اجلاس منعقد ہوا جس میں ڈائریکٹر جنرل پنجاب ڈیزاسٹر مینجمنٹ یونٹ راجہ خرم شہزاد عمر، ڈائریکٹر آپریشن نثار احمد ثانی، ڈائریکٹر پی ڈی ایم اے طارق فاروقہ شریک ہوئے جبکہ تمام اضلاع سے ڈپٹی کمشنرز نے آن لائن لنک شرکت کی۔ اجلاس کا مقصد مون سون کے دوران بارشوں سے ہونے والے نقصانات کے ازالے کے لیے لائحہ عمل کی تیاری تھا۔ ریلیف کمشنر بابر حیات تارڈ نے تمام ڈپٹی کمشنرز کو ہدایت کی کہ وہ اپنے متعلقہ اضلاع میں مون سون کے دوران جانی و مالی نقصانات کی جانچ پڑتال کے لیے سروے کروائیں۔

تیز بارشوں اور سیلاب سے متاثرہ پبلک انفراسٹریکچر کی مرمت کے لیے ضروری کاروائی عمل میں لائی جائے۔بارشوں کے دوران چھتوں کے گرنے اور کرنٹ لگنے سے ہلاکتوں کے تخمینے کے بعد آفت زدہ خاندانوں کی مالی معاونت کے لیے معلومات کی جانچ پڑتال کے بعد امدادی رقوم کی تقسیم کی جائیں گی۔ ریلیف کمشنر نے بتایا کہ ہلاک ہونے والوں کے لواحقین میں 8،8لاکھ روپے کی امدادی رقوم تقسیم کی جائیں گی۔مویشیوں اور فصلوں کے نقصانات کا بھی ازالہ کیا جائے گا۔

ڈائریکٹر جنرل پنجاب ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی راجہ خرم شہزاد نے اجلاس کو نقصانات کے ازالے کے لیے مجوزہ لائحہ عمل پر بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ پنجاب کے مختلف اضلاع سے ملنے والی اطلاعات کے مطابق مجموعی طور پر مون سون کے دوران اب تک 104 اموات، 175شدید زخمی جبکہ 111معمولی زخمی رپورٹ کیے گئے۔ اس کے علاوہ چھتیں گرنے کے220واقعات اور 17مقامات سے دیواریں گرنے اور ایسے ہی دیگر نقصانات کی اطلاعات موصول ہوئیں۔ فصلیں نقصانات سے محفوظ رہیں۔ ایک مقام سے مویشیوں کی ہلاکت کی اطلاع موصول ہوئی۔ 17دکانیں متاثر ہوئیں۔