انسانی حقوق کے عالمی دن  کے حوالے سے گورنر ہاؤس لاہور میں شاندار تقریب کا انعقاد

تقریب میں بھارت میں سکھ کسانوں کے ساتھ ہونیوالے ظلم کی پر زور مذمت کی گئی تقریب میں صوبائی وزیر اعجاز عالم آگسٹین سمیت متعدد اہم شخصیات کی خصوصی شرکت

 انسانی حقوق کے عالمی دن  کے حوالے سے گورنر ہاؤس لاہور میں شاندار تقریب کا انعقاد

لاہور: صوبائی محکمہ انسانی حقوق و اقلیتی امور کیجانب سے ہر سال 10دسمبر کو انسانی حقو ق کا عالمی دن بہت شاندار طریقے سے منایا جاتا ہے تاہم اس سال کورونا کی وباء کے باعث لاہور کے گورنر ہاؤس میں ایک سادہ تقریب کا انعقاد کیا گیا، جس میں صوبائی وزیر انسانی حقوق واقلیتی امور اعجاز عالم آگسٹین،پارلیمانی سیکرٹری انسانی حقوق سرار مہندر پال سنگھ،ایم این اے جمشید تھامسن،ایم پی اے ہارون عمران گل سمیت متعدد اہم سیاسی و سماجی شخصیات نے کثیر تعداد میں شرکت کی۔

تقریب کا باقاعدہ آغاز تلاوت قرآن پاک سے کیا گیا جبکہ ڈائریکٹر انسانی حقوق محمد یوسف نے تمام حاضرین کو خوش آمدید کہا اور انسانی حقوق کے عالمی دن کی اہمیت کو اجاگر کرنے کے لئے مختصر خطاب کیا۔تقریب میں محکمہ انسانی حقوق کی جانب سے گورنر پنجاب چوہدر ی سرور کے ہاتھوں انسانی حقوق کیلنڈر 2021کی تقریب رونمائی بھی کرائی کی گئی۔سیکرٹری انسانی حقو ق ندیم الرحمان نے محکمہ کی کارکردگی بارے بتایا کہ محکمہ انسانی حقو ق کے پلیٹ فارم سے صوبہ بھر میں انسانی حقو ق کے تحفظ کو یقینی بنانے کیلئے متعدد اقدامات کیئے جا چکے ہیں جبکہ مذہبی اقلیتوں کے جملہ مسائل کا تحفظ اور حقوق کو یقینی بنانے کیلئے ایک جامع پیکج کا اجراء کیا جا چکا ہے،جس میں تعلیم کوٹہ،ملازمت اور دیگر شامل ہیں۔تقریب میں گرلز گائیڈ ایسوسی ایشن کے بچوں نے ایک خوبصورت خاکے کی مدد سے معاشرے میں چائلڈ لیبر اور بالخصوص خواتین پر ہونیوالے مظالم کو بڑے خوبصورت اندا ز میں پیش کیا۔

تمام شرکاء نے اپنی تقاریر میں انسانی حقوق کے عالمی دن کو شاندار طریقے سے منانے پر محکمہ انسانی حقوق کی کاوشوں کو خراج تحسین پیش کیا اور کشمیر میں جاری بد ترین انسانیت کی خلاف ورزی کی شدید الفاظ میں مذمت کی۔ تقریب سے خطاب کے دوران صوبائی وزیر انسانی حقوق و اقلیتی امور اعجاز عالم آگسٹین نے کہا کہ انسانی حقوق کی فراہمی ریاست کی اولین ذمہ داری ہے اور کوئی بھی ریاست مضبوط بنیادوں پر اس وقت تک کھڑی نہیں ہو سکتی،جب تک ریاست کے تمام شہریوں کو یکساں حقوق کی فراہمی یقینی نہ ہو سسکے۔آئین پاکستان میں انسانی حقوق کو بڑے واضح انداز میں پیش کیا گیا ہے جبکہ پنجاب حکوم ت نے مذہبی اقلیتو ں کیلئے دو فیصد کوٹہ مختص کیا ہے اور مذہبی اقلیتوں کے مذہبی مقامات کی تزئین و آرائش کیلئے دس کروڑ روپے مختص کیئے جا چکے ہیں۔

انہوں نے کہاکہ ضلعی سطح ہر انسانی حقوق کی کمیٹیز کو وزیراعلیٰ پنجاب کی طرف سے منظوری کے بعد فعال کردیا گی ہے جبکہ خواتین کو تیزاب گردی سے بچانے کے لئے موثر قانون ساز ی کی جارہی ہے۔صوبائی وزیر نے مزیدکہاکہ حکومت پنجاب خواتین کو برابری اور انصاف کی فراہمی یقینی بنانے کے لئے پنجا ب کے مختلف اضلاع میں خواتین پر تشدد کے خاتمے کے حوالے دے مختلف سینٹرز کا قیام عمل میں لانے جا رہی ہے تاکہ خواتین کے حقوق کی حفاظت یقینی بنائی جا سکے۔انہوں نے کہاکہ آج ہم سب ملکر مشترکہ طور پر مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی پامالی کی بھرپور مذمت کرتے ہیں جبکہ بھارت میں ہی سکھ برادری کے کسانوں پر ظلم و ستم کی بھی پر زور مذمت کرتے ہیں۔انہوں نے کہاکہ آج کے دن ہم کشمیری بھائیوں کو پیغام دینا چاتے ہیں کہ پوری پاکستانی قوم ان کے ساتھ کھڑی ہے۔ صوبائی وزیر نے مزید کہاکہ آج کے دن ہم سب کو ملکر عہد کرنا ہوگا کہ انسانیت کی تذلیل بالکل برداشت نہیں کریں گے اور کہیں پر ظلم وغیرہ کی محض ویڈیوز ہی نہیں بنائیں گے بلکہ آگے بڑھ کر ظلم کو روکیں گے اور اس کے لئے پنجاب حکومت ہمیشہ آپ کے ساتھ کھڑی ہے۔

انہوں نے کہاکہ تحریک انصاف وہ واحد جماعت ہے جو نوجوانوں کی وجہ سے برسر اقتدار آئی ہے اور خواہاں ہے کہ نوجوان نسل کے ذریعے پاکستان کو خوشحالی کی جانب لیکر جائیں۔ صوبائی وزیر نے اپنے خطاب کے اختتام پر محکمہ انسانی حقوق کیجانب سے تقریب کو منعقد کرنے پر خراج تحسین پیش کیا اور نوجوانوں سے اپیل کی کہ کشمیر کی آزادی کیلئے ہر فورم پر حکومت پاکستان کے ساتھ ملکر آواز اٹھائیں تاکہ معصوم کشمیری بھی آزاد فضاء میں سانس لے سکیں۔تقریب کے اختتام پر فلاحی اداروں کے نمائندگان کو ہفتہ انسانی حقوق کو یادگار بنانے پر تعریفی اسناد حاصل پیش کی گئیں۔فلاحی اداروں میں برگد،یوتھ ڈیویلپمنٹ فاؤنڈیشن،ہیومن فرینڈز آرگنائزیشن،گڈ تھنکر آرگنائزیشن،فیسز آف پاکستان،ایس پی اواور یونیک گروپ آف کالجز کے نمائندگان شامل تھے۔