اپوزیشن لاہور والوں پر رحم کھائے،کوروناکے باوجود جلسہ شہریوں کو موت کے منہ میں دھکیلنا ہے:  محمودالرشید

اپوزیشن جماعتوں کی دال جلد ہی جوتیوں میں بٹے گی، لاہور جلسے کے بعدان کے اختلافات کھل کے سامنے آجائیں گے پی ٹی آئی کوئی کاغذی پارٹی نہیں ہے، وزیراعظم کی ڈائیلاگ کی خواہش کو کمزوری نہ سمجھاجائے  آئیڈیل سول ملٹری تعلقات سے ملک ترقی کر رہا ہے، ورلڈ بنک نے اپنی رپورٹ میں معاشی صورتحال کو تسلی بخش قرار دیا ہے:  پریس کانفرنس

 اپوزیشن لاہور والوں پر رحم کھائے،کوروناکے باوجود جلسہ شہریوں کو موت کے منہ میں دھکیلنا ہے:  محمودالرشید

 لاہورر:  وزیرہاؤسنگ  واربن ڈویلپمنٹ پنجاب میاں محمودالرشیدنے کہا ہے کہ پی ڈی ایم اے میں شامل اپوزیشن جماعتیں اہل لاہور پر رحم کھائیں۔ کوروناکے باوجود جلسہ کرنا شہریوں کو موت کے منہ میں دھکیلنے کے مترادف ہے۔ اہل لاہور سنجیدگی کا مظاہرہ کرتے ہوئے 13دسمبر کو جلسے کا بائیکاٹ کریں گے۔ محکمہ تعلقات عامہ پنجاب میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ استعفوں کا ٹوپی ڈرامہ ساری قوم نے دیکھ لیا ہے۔ اپوزیشن والے ایک دن استعفیٰ دینے کا فیصلہ کرتے ہیں دوسرے دن بھاگ جاتے ہیں،ان کے استعفوں سے ہمیں کوئی فرق نہیں پڑتا، جس جگہ استعفیٰ دیں گے وہاں ضمنی الیکشن کروا دیئے جائیں گے۔ان کا تضاد لاہور جلسے کے بعد کھل کے سامنے آجائے گااور جلد ہی ان کی دال جوتیوں میں بٹے گی۔

پی ڈی ایم اے میں شامل تمام جماعتیں مل کر بھی مینار پاکستان پارک کا ایک کونہ بھی نہیں بھر سکتیں۔ وزیراعظم کی ڈائیلاگ کی خواہش کو کمزوری پر محمول نہ کیا جائے۔پی ٹی آئی کوئی کاغذی پارٹی نہیں ہے۔ میاں محمودالرشیدنے کہا کہ اپوزیشن سینٹ انتخابات میں رخنہ ڈال کر انہیں سبوتاژ کرنا چاہتی ہے لیکن سینٹ انتخابات وقت پر ہوں گے اورحکومت بلیک میلنگ میں نہیں آئے گی۔میاں محمودالرشیدنے کہا کہ آئیڈیل سول ملٹری تعلقات کی وجہ سے ملک ترقی کر رہا ہے اور ورلڈ بنک نے بھی اپنی رپورٹ میں پاکستان کی معاشی صورتحال کو تسلی بخش قرار دیا ہے۔ کورونا، لاک ڈاؤن اور تمام تر مشکلات کے باوجود معاشی صورتحال ابتر نہیں ہوئی۔

میاں محمودالرشیدنے کہا کہ پی ڈی ایم کی لیڈرشپ بھی ایک پیج پر نہیں۔مذاکرات کے حوالے سے شہبازشریف کچھ کہتے ہیں خاقان عباسی کچھ اور۔ اپوزیشن کے تمام حربوں کا جواب ہر سطح پر خم ٹھونک کر دیں گے۔کرپشن کے علاوہ تمام معاملات پر اپوزیشن سے مذاکرات ہوسکتے ہیں، اپوزیشن کی تمام تر اچھل کودبدعنوانی کے مقدمات سے جان چھڑانے کے لئے ہے لیکن عمران خان کرپشن کیسز کو منطقی انجام تک پہنچائیں گے۔ اپوزیشن جلسے جلوسوں کو 2ماہ کیلئے مؤخر کر دے تو کوئی فرق نہیں پڑے گا۔