اگر سیاحتی مقامات والے ریسٹورانٹس کو کھولا گیا ہے تو شہری مقامات والے ریسٹورانٹس کو بھی انہی ایس او پیز کے تحت کھولا جانا چاہیے: چیئرمین لاہور ریسٹورنٹس

18 جولائی2020 سے پہلے اگر گورنمنٹ نے ریسٹورنٹ نہیں کھولے تو ہم بھرپو راحتجاج کریں گے

اگر سیاحتی مقامات والے ریسٹورانٹس کو کھولا گیا ہے تو شہری مقامات والے ریسٹورانٹس کو بھی انہی ایس او پیز کے تحت کھولا جانا چاہیے: چیئرمین لاہور ریسٹورنٹس

لاہور(دانش خان) چیئرمین لاہور ریسٹورنٹس یونٹی عامر رفیق قریشی، سلمان غوری ،کیٹرنگ ایسو سی ایشن پریذیڈنٹ پنجاب، چوہدری فرغام، پاکستان پولٹری ایسوسی ایشن پریذیڈنٹ پنجاب، محمد رفیق ،فروٹ اینڈ ویجیٹیبل ایسو سی یشن پریذیڈنٹ پنجاب، وجدان ،عظیم طباق ریسٹورنٹ ، گوہریز حبیب خان لودھی، کنٹری ہیڈ KFC عارف خان، Cock and Bullریسٹورنٹ ، حیدر عباس ریسٹورنٹ کنسلٹنٹ ، حاجی نذیر، لونگ فونگ ریسٹورنٹ ،علی شان، مون مارکیٹ ، شازیب بٹ، مون مارکیٹ ، عارف گجر ،اچھرہ لاہور ، علی کاشف جٹ ،شاہ کمال لاہور 18 جولائی2020 سے پہلے اگر گورنمنٹ نے ریسٹورنٹ نہیں کھولے تو ہم بھرپو راحتجاج کریں گے۔ لاہور ریسٹورنٹ یونٹی کے فورم سے ہم ارباب اختیار کو یہ بات باور کروانا چاہتے ہیں کہ ریسٹورانٹس بازاروں سے زیادہ محفوظ ہیں کیو نکہ ریسٹورانٹس میں حفاظتی تدابیر کی بہترپاسداری کی جا تی ہے۔

اگر سیاحتی مقامات والے ریسٹورانٹس کو کھولا گیا ہے۔ تو شہری مقامات والے ریسٹورانٹس کو بھی انہی ایس او پیز کے تحت کھولا جانا چاہیے اور حکومت کو اس انڈسٹری سے منسلک لاکھوں لوگوں کے روزگار کو بھی ملحوظ خاطر لانا چاہیے۔ پارکس اور ٹرانسپورٹ میں اگر ایس او پیز کے تحت محفوظ سفر ممکن ہے تو ریسٹورانٹس میں کیوں نہیں ، جبکہ ریسٹورانٹس تو عام حالات میں بھی صارفین کی حفاظت صحت کے لیے موثر اقدامات کرنے کے ماہر ہو تے ہیں۔ ریسٹورنٹ کی ٹائمنگ پہلے کی طرح بحال کی جائیں۔ گورنمنٹ اگر مخصوص ٹائم کے لیے ریسٹورنٹ کھولنے کی اجازت دے گی تو ہم اس کی خلاف ورزی کریں گے۔18جولائی 2020تک تمام ریسٹورانٹس کے کرایوں اور بلوں کو معاف کرنا چاہیے اور دوبارہ کھلنے کے بعد 6ماہ تک نصف کرایہ اور نصف ماہا نہ بل لاگو ہونا چاہیے۔ ریسٹورانٹس مالکان اور سٹاف کے معاشی قتل کو فورا روکا جانا چاہیے۔