ترک پارلیمنٹ میں مسلح چوکیدار تعینات کرنے کا بل منظور

اس اقدام کا مقصد صدر طیب اردوان کی اپنی وفا دار ملیشیا قائم کرنا ہے۔ نئے قانون کے تحت چوکیدار رات کو سڑکوں پر گشت کر کے چوری چکاری اور چھینا جھپٹی کی وارداتوں کی روک تھام کر سکیں گے

ترک پارلیمنٹ میں مسلح چوکیدار تعینات کرنے کا بل منظور

ترک پارلیمنٹ نے رات کو سڑکوں پر مسلح چوکیدار تعینات کرنے کے متنازع بل کی منظوری دے دی ہے۔ ذرائع کے مطابق اپوزیشن نے بل پر احتجاج کرتے ہوئے کہا کہ اس اقدام کا مقصد صدر طیب اردوان کی اپنی وفا دار ملیشیا قائم کرنا ہے۔ نئے قانون کے تحت چوکیدار رات کو سڑکوں پر گشت کر کے چوری چکاری اور چھینا جھپٹی کی وارداتوں کی روک تھام کر سکیں گے۔ چوکیدار مشتبہ افراد کو روک کر ان کی تلاشی بھی لے سکیں گے ، انہیں لگ بھگ پولیس کے برابر اختیارات حا صل ہوں گے ۔ واضح رہے کہ ترک صدر نے گزشتہ روز 41 صوبوں میں نئے گورنر تعینات کیے ہیں، سرکاری ضمیمے میں شائع ہونے والے فیصلے کے مطابق ان میں 23گورنروں کے صوبوں کو تبدیل کیا گیا جب کہ 18نئے گورنروں کا تقرر عمل میں آیا ہے۔