گندم و آٹے کی قیمتوں میں استحکام کیلئے کسی اقدام سے گریز نہیں کرینگے:عبدالعلیم خان

وزیر اعظم نے رکاوٹیں ختم کر دیں، 5لاکھ ٹن گندم فوری درآمد ہوئی تو قیمتیں نیچے آ جائیں گی  ٹارگٹڈ سبسڈی کیلئے محکمہ خوراک نئی سفارشات تیار کریگا:سینئر وزیر کی زیر صدارت اجلاس

گندم و آٹے کی قیمتوں میں استحکام کیلئے کسی اقدام سے گریز نہیں کرینگے:عبدالعلیم خان

لاہور: سینئرو وزیر خوراک پنجاب عبدالعلیم خان نے کہا ہے کہ صوبے میں گندم و آٹے کی قیمتوں میں استحکام کیلئے کسی اقدام سے گریز نہیں کریں گے اور ذخیرہ اندوزوں کو کسی قیمت پر من مانی نہیں کرنے دی جائے گی۔انہوں نے کہاکہ وزیر اعظم عمران خان نے گندم کی امپورٹ کی راہ میں حائل تمام رکاوٹیں دور کر دی ہیں اور جیسے ہی 5لاکھ ٹن گندم درآمد ہوئی تو قیمتیں خود بخود نیچے آجائیں گی۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے گندم و آٹے کی قیمتوں اور سبسڈی کے نئے نظام کے حوالے سے منعقدہ اعلیٰ سطحی اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔

عبدالعلیم خان نے کہا کہ وزیر اعظم کے حکم پر فیڈرل گورنمنٹ کی ڈیوٹی معاف ہو چکی ہے اور اب پرائیویٹ سیکٹر جتنی چاہے گندم بیرون ملک سے منگوا سکتا ہے تاکہ مارکیٹ میں کسی کی "مناپلی"نہ قائم ہو سکے۔ اجلاس میں گندم و آٹے کی قیمتوں کے لئے نئی سفارشات تیار کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے سینئر وزیر پنجاب عبدالعلیم خان نے کہا کہ آٹے پر بلا امتیاز سب کے لئے سبسڈی مناسب طریقہ کار نہیں۔

انہوں نے کہا کہ صرف غریب اور مستحق افراد کو سستے داموں آٹا ملنا چاہیے جس کے لئے احساس پروگرام کے ڈیٹا یا یوٹیلٹی سٹورز کے نیٹ ورک کو استعمال میں لا سکتے ہیں۔ عبدالعلیم خان نے کہاکہ ڈیمانڈ اینڈ سپلائی کے ایشو کے باعث گندم وآٹے کی قیمتوں میں اتار چڑھاؤ آتا ہے۔انہوں نے بتایا کہ اعداد و شمار کے مطابق گندم کی پیداوار کا50لاکھ ٹن ابھی مارکیٹ میں موجود ہے جسے بعض عناصر فالتو منافع کے لئے ہولڈ کر لیتے ہیں۔

سینئر وزیر عبدالعلیم خان نے کہا کہ وزیر اعظم عمران خان کا گندم امپورٹ کرنے کا فیصلہ انتہائی مفید ثابت ہوگا اور انشاء اللہ صوبے میں گندم و آٹا فراوانی کے ساتھ مناسب نرخوں پر مہیا ہوگا۔سینئر وزیر عبدالعلیم خان نے محکمہ خوراک کے حکام کو ہدایت کی کہ وہ ٹارگٹڈ سبسڈی کے حوالے سے فوری طور پر نئی سفارشات تیار کریں جنہیں وزیر اعلیٰ پنجاب کی منظوری کے بعد وزیر اعظم عمران خان کو پیش کیا جائے گا۔

اجلاس میں وزیر صنعت پنجاب میاں اسلم اقبال اور چیف سیکرٹری جواد رفیق ملک نے بھی شرکت کی اور گندم و آٹے کی قیمتوں کے حوالے سے اظہار خیال کیا۔ سیکرٹری خوراک وقاص علی محمود نے گندم کے ذخیرے کی موجودہ صورتحال پر بریفنگ دی اور بالخصوص آٹے کی سبسڈی کے حوالے سے نئی سفارشات پر روشنی ڈالی۔