صوبائی محکمہ مال کی جانب سے محصولات اکٹھا کرنے میں شاندار کارکردگی دکھانے والے ضلعی افسران کے اعزاز میں تقریب کاانعقاد

 بورڈ آف ریونیو پنجاب نے مالی سال 2019-20 میں مقررہ ہدف سے 104فیصدزائد یعنی67331ملین روپے کے محصولات جمع کئے ہیں  محصولات اکٹھا کرنے والے افسران و اہلکاروں کی خدمات قابل ستائش ہیں،محنت، لگن اور دیانت داری سے کام کرنے والے افسران و اہلکار محکمے کا قیمتی اثاثہ ہیں: سینئر ممبر بورڈ آف ریونیو بابر حیات تارڑ

صوبائی محکمہ مال کی جانب سے محصولات اکٹھا کرنے میں شاندار کارکردگی دکھانے والے ضلعی افسران کے اعزاز میں تقریب کاانعقاد

لاہور: صوبائی محکمہ مال کی جانب سے محصولات اکٹھا کرنے میں شاندار کارکردگی دکھانے والے  9 ڈپٹی کمشنرز،21 ایڈیشنل ڈپٹی کمشنرز (ریونیو) اور38 اسسٹنٹ کمشنرز کے اعزاز میں آج سول سیکرٹریٹ کے کمیٹی روم میں خصوصی تقریب منعقد ہوئی۔ جس میں سینئر ممبر بورڈ آف ریونیو بابر حیات تارڑ اورمتعلقہ افسران نے شرکت کی۔ بابر حیات تارڑنے شاندار کارکردگی پرضلعی افسران میں تعریفی سرٹیفکیٹس تقسیم کئے۔ سینئر ممبر بابر حیات تارڑنے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے بتایا کہ بورڈ آف ریونیونے مالی سال 2019-20 میں 67331ملین روپے کے محصولات جمع کئے ہیں جو مقررہ ہدف 65000ملین روپے سے 104فیصد زیادہ ہیں۔

انہوں نے کہا کہ   محصولات اکٹھا کرنے والے افسران و اہلکاروں کی خدمات قابل ستائش ہیں۔محنت، لگن اور دیانت داری سے کام کرنے والے افسران و اہلکار ہمارا قیمتی اثاثہ ہیں۔ جزا اور سزاکے نظام سے اداروں کی کارکردگی میں بہتری آتی ہے اور محنت سے کام کرنے والے افسران و اہلکاروں کی بھر پور حوصلہ افزائی کی جائے گی۔انہوں نے کہا کہ محنتی اور فرض شناس افسران کی کارکردگی قابل تقلید ہے اور ہمیں اسی جذ بے سے کام جاری رکھنا ہے کیونکہ محصولات سے حاصل ہونے والی آمدنی عوام کی فلاح پر خرچ کی جاتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ فیلڈ سٹاف نے کورونا اور ٹڈی دل بحران میں بھی بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کیا۔ بابر حیات تارڑنے مزید بتایا کہ صوبائی ریونیو اکیڈمی کے قیام پر غورکیا جا رہا ہے تا کہ ریونیو سٹاف کیلئے ٹریننگ کا اہتمام کیا جاسکے۔اسی طرح اہلکاروں کی استعداد کار میں اضافے کیلئے جدید ٹیکنالوجی کو بروئے کار لایا جائے گا۔ ممبر بورڈ محمد شعیب وڑارئچ، بورڈ ممبران، سیکرٹری ٹیکسزریونیو بورڈ فیصل فرید، ڈپٹی سیکرٹری ریکوری محمد رفیق و دیگر افسران نے بھی تقریب میں شرکت کی۔