سابقہ ادوار میں 2012 تا2018 پورے پنجاب میں صرف 68ڈے کیرز بنائے گئے : صوبائی وزیر وویمن ڈویلپمنٹ آشفہ ریاض

پنجاب کے 12اضلاع میں موجود 16ویمن ورکنگ ہاسٹلزمیں خواتین کے تحفظ،کم بجٹ میں بہترین رہائشی سہولیات کی فراہمی اور شفاف طرز پرانتظام وانصرام کی مانیٹرنگ کے لیے ویمن ہاسٹل اتھارٹی کاقیام عمل میں لانے کے لیے ویمن ہاسٹلز اتھارٹی ایکٹ 2020 پنجاب کیبنٹ کی جانب سے  منظورہوچکا ہے

 سابقہ ادوار میں 2012 تا2018 پورے پنجاب میں صرف 68ڈے کیرز بنائے گئے : صوبائی وزیر وویمن ڈویلپمنٹ آشفہ ریاض

لاہور : صوبائی وزیر وویمن ڈویلپمنٹ آشفہ ریاض نے آج اپنے دفتر میں سول سوسائٹی کے نمائندگان سے بات کرتے ہوئے کہا کہ سابقہ ادوار میں 2012 تا2018 پورے پنجاب میں صرف 68ڈے کیرز بنائے گئے لیکن2018 سے ان کا دائرہ کاربڑھاتے ہوئے محکمہ اپنے اس دوسالہ دور حکومت میں پنجاب میں اس وقت 137 DCsبنارہے ہیں جن میں سے 37 فنکشنل ہوچکے ہیں 82 آپریشن کے لیے بالکل تیار ہیں جبکہ 18زیرتکمیل ہیں۔ڈے کیرز کے قیام سے متعلق شرائط اور درخواست دینے کے عمل کو نہایت آسان بنادیا گیا ہے تاکہ تمام ورکنگ لیڈیز اوران کے بچیان سنٹرز کے ثمرات سے استفادہ حاصل کرسکیں۔

آشفہ ریاض نے کہا کہ پنجاب کے 12اضلاع میں موجود 16ویمن ورکنگ ہاسٹلزمیں خواتین کے تحفظ،کم بجٹ میں بہترین رہائشی سہولیات کی فراہمی اور شفاف طرز پرانتظام وانصرام کی مانیٹرنگ کے لیے ویمن ہاسٹل اتھارٹی کاقیام عمل میں لانے کے لیے ویمن ہاسٹلز اتھارٹی ایکٹ 2020 پنجاب کیبنٹ کی جانب سے  منظورہوچکا ہے۔اس ایکٹ سے پرائیویٹ ویمن ہاسٹلز اس اتھارٹی کی زیرنگرانی صوبے بھر کی خواتین کو معیاری رہائشی سہولیات کی فراہمی کو یقینی بنانے کے پابند ہونگے۔

محکمہ نے2020میں پنجاب ویمن ڈویلپمنٹ پالیسی کے نفاذ کا فریم ورک تشکیل دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ بین الاقوامی یوم خواتین 7 اور 8 مارچ2020  قومی سرمایہ کی بچت اور کفایت شعاری کو مدنظررکھتے ہوئے  UN اور UNFPAکے اشتراک سے آگاہی سیمینارزکے انعقاد کی صورت میں منایا گیا۔قومی سطح پرخواتین کے ذریعے نئی نسل میں امن سازی بھائی چارہ صبرواستقلال اور اخوت پسندی کے رجحانات کی تخلیق و تربیت کے لئے ملتان اور راولپنڈی میں خواتین یونیوسٹیوں میں دختران پاکستان آگاہی سمینارز کا انعقاد کیا گیا۔

صوبائی وزیر وویمن ڈویلپمنٹ نے مزید کہاکہ حقوق نسواں سے متعلق کیے گئے اہم اقدامات کی آگہی کے لئے  2019 سوشل میڈیاکے ذریعے ڈیجیٹل میگزین کا اجرا کیا گیا جسکا تیسرا آن لائن ایڈیشن جولائی  2020میں جاری کیا گیا۔دوران کووڈ 19خواتین کے لئے و قت کے بہتراستعمال کے لیے محکمہ نے پیغام پاکستان اور ان ایبلرز کے تعاون سے پنجاب میں لڑکیوں کے لیے گھر بیٹھے مہارت یافتہ فری لانسنگ کی ترقی وترویج اور ورچوئل ٹرننگزکے ذریعے خواتین کی کیپسٹی بلڈنگ کے لیے ای ٹرننگزکروائیں۔ان ٹرننگز میں 30 سے 50 فیصد کوٹہ خواتین کا رکھا گیا۔ ٹول فری پنجاب ویمن  ہیلپ لائن 1043عمل میں لائی گئی جو اس وقت 24گھنٹے کام کررہی ہے  اس میں تمام خواتین کال ایجنٹس،تین لیگل ایڈوائزرز،نفسیاتی و معاشرتی کونسلرز، سپروائزری اورمینجمنٹ عملہ کام کررہا ہے۔ یہ ٹیم ورک اسٹیشن پر ہراسگی، صنفی امتیاز،جائیداد سے متعلق جھگڑے، وراثتی حقوق اور گھریلو تشدد سے متعلق موصول شدہ شکایات کی صورت میں خواتین کو کونسلنگ،رہنمائی اور سہولیات فراہم کررہی ہے۔