ملک کے پسماندہ علاقوں کے بچوں کو تعلیم دینے کے لیے کوشاں فلاحی ادارے حقیقی طور پر ریاست کی ذمہ داری میں شریک ہیں، صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی

ملک کے پسماندہ علاقوں کے بچوں کو تعلیم دینے کے لیے کوشاں فلاحی ادارے حقیقی طور پر ریاست کی ذمہ داری میں شریک ہیں، صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی

کراچی :صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے کہا ہے کہ ملک کے پسماندہ علاقوں کے بچوں کو تعلیم دینے کے لیے کوشاں فلاحی ادارے حقیقی طور پر ریاست کی ذمہ داری میں شریک ہیں اور معاشرے کے تمام متعلقہ طبقات پر لازم ہے کہ وہ ان کے فلاحی کام میں مکمل تعاون کریں۔ صدر نے ان خیالات کا اظہار غیر منافع بخش گرین کریسنٹ ٹرسٹ (جی سی ٹی) کے وفد سے ملاقات کے دوران کیا ، جس نے منگل کو یہاں گورنر ہاؤس کراچی میں ان سے ملاقات کی۔

وفد کی قیادت چیف ایگزیکٹو آفیسر جی سی ٹی زاہد سعید کر رہے تھے۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے صدر نے کہا کہ سکولوں میں بچیوں کی تعلیم کی برقراری کی سطح کو بہتر بنانے کے لیے ثقافتی تبدیلی کی ضرورت ہے۔ انہوں نے گرین کریسنٹ ٹرسٹ کی طرف سے کی جانے والی تحقیق و ترقی کی سرگرمیوں کو سراہا تاکہ وسائل کے زیادہ سے زیادہ استعمال کے بارے میں شعور پیدا کرنے کے لیے وفاقی حکومت اور تمام وفاقی یونٹس کی طرف سے تعلیم پر خرچ کیے جانے والے وسائل کو اجاگر کیا جائے۔

نظام تعلیم میں ڈھانچہ جاتی اصلاح کی اہمیت پر روشنی ڈالتے ہوئے صدر مملکت نے کہا کہ معیاری تعلیم دینے کے لیے اساتذہ کی تربیت ضروری ہے۔ انہوں نے کہا کہ تعلیم کے شعبے کے لیے مختص عوامی فنڈز انتہائی مناسب طریقے سے اور انتہائی مالی احتیاط کے ساتھ خرچ کیے جائیں۔ انہوں نے کہا کہ وہ تعلیم کے شعبے کے متعلقہ سٹیک ہولڈرز پر زور دیں گے کہ وہ سکولوں میں داخل بچوں کے مستقبل کو محفوظ بنانے کے لیے پاکستان کے تعلیمی بجٹ کے بہترین استعمال کو یقینی بنانے کے لیے ایک مضبوط حکمت عملی کے ساتھ آئیں۔ گرین کریسنٹ ٹرسٹ کے سی ای او نے صدر مملکت کو تعلیم کے شعبے میں بہتری کے لیے مختلف تجاویز سے آگاہ کیا۔

انہوں نے کہا کہ جی سی ٹی نے پچھلے 27 سالوں سے سندھ کے کم ترقی یافتہ علاقوں میں 150 سے زیادہ خیراتی اسکولوں کے نیٹ ورک کا انتظام کیا ہے جس میں 29،000 بے سہارا خاندانوں کے بچے شامل ہیں۔ انہوں نے کہا کہ جی سی ٹی کا وژن 2025 سندھ میں ضرورت مند خاندانوں کے ایک لاکھ بچوں کے لئے ایسے 250 سکول قائم کرنا ہے اور اس مقصد کے حصول کے لیے ہم خیال فلاحی اداروں کے ساتھ اتحاد قائم کیا جا رہا ہے۔

صدر عارف علوی نے جی سی ٹی کے وژن کو سراہا اور وفد کو یقین دلایا کہ موجودہ حکومت اس طرح کے فلاحی کاموں کے لیے معاونت فراہم کرے گی۔ انہوں نے تعلیم سے متعلق مستقبل پر مبنی نقطہ نظر کو اپنانے اور معذور افراد کو مرکزی دھارے کے تعلیمی نظام میں شامل کرنے پر توجہ دینے کی ضرورت پر بھی زور دیا