مخدوم ہاشم جواں بخت کی زیر صدارت کابینہ کمیٹی برائے فنانس اینڈ ڈویلپمنٹ کا 45واں اجلاس

جس میں صوبائی وزیر برائے صنعت و تجارت میاں اسلم اقبال، سیکرٹری خزانہ عبداللہ سنبل، چیئرمین پلاننگ اینڈ ڈویلپمنٹ حامد یعقوب شیخ  اور متعلقہ محکموں سے سیکرٹری صاحبان نے شرکت کی

 مخدوم ہاشم جواں بخت کی زیر صدارت کابینہ کمیٹی برائے فنانس اینڈ ڈویلپمنٹ کا 45واں اجلاس

لاہور: وزیرخزانہ پنجاب مخدوم ہاشم جواں بخت کی زیر صدارت کابینہ کمیٹی برائے فنانس اینڈ ڈویلپمنٹ کا 45واں اجلاس آج وزیر اعلیٰ سیکرٹریٹ میں منعقد ہوا جس میں صوبائی وزیر برائے صنعت و تجارت میاں اسلم اقبال، سیکرٹری خزانہ عبداللہ سنبل، چیئرمین پلاننگ اینڈ ڈویلپمنٹ حامد یعقوب شیخ  اور متعلقہ محکموں سے سیکرٹری صاحبان نے شرکت کی۔ اجلاس میں مختلف محکموں کی جانب سے 20سے زائد ایجنڈے پیش کئے گئے۔ محکمہ سوشل ویلفیئر و بیت المال میں ایڈیشل سیکرٹری اور سپیشل سیکرٹری کی نشست اور نابینا افراد کی88نشستوں پر بھرتیوں کی اجازت دے دی گئی۔محکمہ معدنیات کے تحت سرنگوں میں کام کے دوران معذور ہونے والے افراد کے لیے ریلیف پیکج اور محکمہ اطلاعات و نشریان کو ہفتہ شان رحمت اللعالمین کی تقریبات کے لیے گرانٹ کی منظوری۔

سیکرٹری صنعت کی پنجاب میں 32ماڈل بازاروں میں کسانوں کے لیے پلیٹ فارمز کے قیام اور میو ہسپتال میں کارڈیک اور ویسکولر سرجری کے شعبہ کی اَپ گریڈیشن کے لیے سپلیمنٹری گرانٹ منظور کی گئی۔ ضلع ٹوبہ ٹیک سنگ میں 5کلومیٹر کی موچی والا روڈ کی مرمت اور چوڑائی میں اضافے کی سکیم کو بھی سالانہ ترقیاتی پروگرام کا حصہ بنانے کی سفارش بھی منظور کر لی گئی۔ ریسکیو 1122 میں ڈی جی اورپنجاب پاور ڈویلپمنٹ کمپنی میں انتظامی نشست پر تعیناتی کو پابندی سے مستثنیٰ قرار دیا گیا۔ ڈاکٹرز کو نان پریکٹسنگ الاؤنس کی ادائیگی کے لیے تعیناتی کے مقام کی بنیاد پر تقسیم کے خاتمے کی درخواست کو محکمہ خزانہ کے تحفظات کی دوری کی شرط پر قبول کر لیا گیا۔ مختلف سرکاری محکموں کی جانب سے اضافی الاؤنس کی سفارشات کو سختی سے رد کرتے ہوئے صوبائی وزیر نے کہا کہ سرکاری ادارے اضافی مراعات کے حصول کے لیے محکمانہ کارکردگی اور سرکاری نظام کو موثر بنائیں۔

انہوں نے کہا کہ بغیر کارکردگی کے اضافی مراعات کی منظوری کا کابینہ کمیٹی کے پاس تو کوئی جواز موجود نہیں۔ محکمے الاونسز میں اضافے سے بجائے ہیومن ریسورس سسٹم میں بہتری کے پروگرام منظور کروائیں۔ محکمہ معدنیات کے تحت سرنگوں میں کام کرنے والے مزدوروں کے لیے جامع ریلیف پیکج کی ضرورت پر زور دیا۔ انہوں نے سیکرٹری محکمہ معدنیات کو ہدایت کی کہ وہ پنجاب سوشل پروٹیکشن اتھارٹی کی معاونت سے خطرات میں کام کرنے والے مزدوروں کے لیے جامع منصوبہ بندی کریں سرنگوں میں کام کرنے والوں کو صحت کارٖڈ ز بھی منظور کروائے جائیں۔ ماڈل بازاروں میں کسان پلیٹ فارمز کے ذریعے کسانوں کی سہولت کو یقینی بنایا جائے۔  

نابینا افرادکے جائز مطالبات ضرور پورے کیے جائیں لیکن انھیں کسی غیر سرکاری ادارے یا سیاسی عنصر کا آلہ کار نہ بننے دیا جائے۔ صوبائی وزیر نے محکمہ خزانہ اور پلاننگ اینڈ ڈویلپمنٹ بورڈ کو ہدایت کی کہ وہ سرکاری اداروں میں بھرتیوں پر پابندی کی پالیسی میں بھرتیوں کی نوعیت کے اعتبار سے پابندی کے اطلاق کو واضح کریں۔ میاں اسلم اقبال نے شہر کے بڑے سرکاری اسپتالوں میں کارڈیک یونٹس کی حالت زار میں بہتری کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے سیکرٹری ہیلتھ کو ہدایت کی کہ وہ محکمہ صحت کے ڈیش بورڈ کے ذریعے اسپتالوں میں مستفید ہونے والے مریضوں اور ہسپتال کی سروسز کی بھی نگرانی کریں۔ عام شہریوں کو سرکاری ہسپتالوں میں آپریشنز کے لیے سفارشیں کیوں تلاش کرنی پڑ رہی ہیں۔ کیا سرکاری ہسپتال عام آدمی کے لیے نہیں ہیں؟

وزیر خزانہ پنجاب مخدوم ہاشم جواں بخت نے کابینہ کمیٹی برائے ریسورس موبلائزیشن کمیٹی 2020-21کے تیسرے اجلاس کی بھی صدارت کی۔ اجلاس میں صوبائی وزیر برائے صنعت و تجارت میاں اسلم اقبال اور صوبائی وزیر برائے مخصولات ملک انور بھی شریک تھے۔ ریسورس موبلائزیشن کمیٹی کے تیسرے اجلاس کا ایجنڈہ پنجاب انفارمیشن ٹیکنالوجی بورڈ کو خودکفیل بنانے کے لیے مجوزہ پلان کی منظوری تھا۔ آئی ٹی بورڈ کی جانب سے ای خدمت سینٹرز پر دی جانے والی خدمات پر سروس چارجز کی وصولی کی درخواست کی گئی تھی صوبائی وزیر نے چیئرمین آئی ٹی بورڈ کو ہدایت کی کہ وہ ای خدمت مراکز میں مزید سروسز کی فراہمی کو یقینی بنائیں اور انھیں فرنچائز ماڈل پر تیار کریں۔ مزید برآں آئی ٹی بورڈ مختلف محکموں کے تحت دی جانے والی خدمات کا جائزہ لے ان کے لیے بہتر ماڈل متعارف کروائے۔ پنجاب لینڈ ریکارڈ اتھارٹی کے تحت خدمات میں بہتری کے کے لیے تجاویز مرتب کی جائیں تاکہ اراضی سینٹرز پر شہریوں کی مشکلات میں کمی کو یقینی بنایا جا سکے۔