پلاننگ اینڈ ڈویلپمنٹ بورڈ کے ملٹی سیکٹورل نیوٹریشن سنٹر نے سن سیکرٹریٹ پنجاب کے اشتراک سے پارلیمنٹرین کے ساتھ مشاورتی اجلاس

جس میں پالیسی اور پروگرام کی سطح پر نیوٹریشن کو اولین ترجیح دی گئی۔ مشاورتی اجلاس میں کوویڈ 19 کے تناظر، غذائیت سے متعلقہ پالیسی کی پیشرفت اور پنجاب میں غذائیت کی صورتحال کو بہتر بنانے کیلئے ٹھوس عملی اقدامات پر خصوصی توجہ دی گئی

پلاننگ اینڈ ڈویلپمنٹ بورڈ کے ملٹی سیکٹورل نیوٹریشن سنٹر نے سن سیکرٹریٹ پنجاب کے اشتراک سے پارلیمنٹرین کے ساتھ مشاورتی اجلاس

لاہور: پلاننگ اینڈ ڈویلپمنٹ بورڈ کے ملٹی سیکٹورل نیوٹریشن سنٹر نے سن سیکرٹریٹ پنجاب کے اشتراک سے پارلیمنٹرین کے ساتھ مشاورتی اجلاس کا انعقاد کیا جس میں پالیسی اور پروگرام کی سطح پر نیوٹریشن کو اولین ترجیح دی گئی۔ مشاورتی اجلاس میں کوویڈ 19 کے تناظر، غذائیت سے متعلقہ پالیسی کی پیشرفت اور پنجاب میں غذائیت کی صورتحال کو بہتر بنانے کیلئے ٹھوس عملی اقدامات پر خصوصی توجہ دی گئی۔ تقریب میں وزیر توانائی ڈاکٹر اختر ملک,پارلیمانی سیکرٹیری پی اینڈ ڈی چوہدری عُمر آفتاب، چیئرمین ٹاسک فورس برائے بین الاقوامی شراکت داری سردار محمد اویس دریشک، صوبائی اسمبلی پنجاب کے ۲۸ ممبر ان، ہیلتھ نیوٹریشن اینڈ پاپولیشن پی اینڈ ڈی ڈاکٹر سہیل ثقلین، چیف ہیلتھ سلیم مسیح،سابق چیئر سن سیکرٹریٹ مبارک سرور، تمام شعبوں کے صوبائی اسٹیک ہولڈرز، وفاقی اورترقیاتی شراکت داروں کے نمائندوں سمیت تمام اسٹیک ہولڈرز نے شرکت کی۔

ممبر ہیلتھ نیوٹریشن اینڈ پاپولیشن ڈاکٹر سہیل ثقلین نے کہا کہ پائیدار ترقیاتی اہداف خاص طور پر 2030 تک ہر قسم کی غذائیت کی کمی کو ختم کرنے کی ضرورت پر توجہ مرکوز ہے۔ یہ صرف تب ہی ممکن ہے جب کوئی مرد، عورت یا بچہ پیچھے نہ رہ جائے جبکہ حالات کتنے ہی مشکل کیوں نہ ہوں۔ اجلاس کے دوران اُنہوں نے صوبہ پنجاب میں غذائیت، ماں کے دودھ کی افادیت اور غذائی مضبوطی کے ایجنڈے کو ترجیح دینے کے حوالے سے پارلیمنٹیرینز کے کردار کو نمایاں کیا۔

اس موقع پر پارلیمنٹیرینز نے کہ کہ غذائیت موجودہ حکومت پنجاب کا اولین ترجیحی ایجنڈا ہے۔غذائیت پر توجہ پاکستان کی قانون ساز اسمبلیوں کی تمام بڑی سیاسی جماعتوں کے منشور میں شامل ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ اس سے غذائیت کی صورتحال کو بہتر بنانے کیلئے ایک مستقل سیاسی وصیت کو یقینی بنایا گیا ہے۔ اس سے قومی گفتگو، سیاسی ایجنڈے اور پالیسیوں کو بہتر بنانے کیلئے حکمت عملی کی راہ ہموار ہو گی جو ایک مضبوط، صحت مند اور خوشحال پاکستان کا باعث بنے گی۔

انہوں نے مزید کہا کہ اب یہ بہترین وقت ہے کہ سیاسی قیادت، پالیسی سازوں، سرکاری محکموں اور دیگر اسٹیک ہولڈرز صوبے میں غذائیت کے مسئلے سے نمٹنے کی پالیسی، حکمت عملی، قانون سازی اور انتظامی ڈھانچے کا جائزہ لیں۔پنجاب ملٹی سیکٹورل نیوٹریشن اسٹریٹجی کے تحت پنجاب میں اسٹنٹنگ میں کمی اور غذائیت سے متعلق مخصوص پروگراموں نے صوبے میں غذائیت کے شعبے کے پائیدار ترقی کے اہداف کے حصول کیلئے پی اینڈ کی قیادت اور کوششوں کو سراہاگیا۔انہوں نے نئے وژن کے ساتھ پنجاب میں ملٹی سیکٹورل نیوٹریشن سنٹر کے دائرہ کار کو وسیع

کرنے کے حوالے سے اپنی مکمل حمایت کو بھی نمایاں کیا۔