صوبائی وزیر صنعت و تجارت میاں اسلم اقبال کی زیر صدارت پیسک بورڈ کااجلاس، پیسک کے سالانہ بجٹ کی منظوری

بورڈ نے پیسک کے ملازمین کیلئے  یوٹیلیٹی الاؤنس، پیسک کے مالی اور انتظامی امور کی منظوری بھی دی غریب ترین افراد کو روزگار کمانے کیلئے مالی اعانت کیلئے پیسک انڈسٹریل ڈویلپمنٹ بنک کے قیام کی اصولی منظوری ہزاروں ایکڑ رقبے پر بننے والے صنعتی مراکز سے پنجاب میں صنعتی انقلاب برپا کریں گے، میاں اسلم اقبال

صوبائی وزیر صنعت و تجارت میاں اسلم اقبال کی زیر صدارت پیسک بورڈ کااجلاس، پیسک کے سالانہ بجٹ کی منظوری

لاہور : صوبائی وزیر صنعت و تجارت میاں اسلم اقبال کی زیر صدارت آج پنجاب سمال انڈسٹریز کارپوریشن کے بورڈ کا  111واں اجلاس منعقد ہوا جس میں پنجاب سمال انڈسٹریز کارپوریشن کے کمیٹی روم میں منعقدہ اجلاس میں پیسک کے سال2020، 21کے لئے 4ارب16کروڑ80لاکھ روپے کے بجٹ کی منظوری دی گئی-بورڈ نے پیسک انڈسٹریل ڈویلپمنٹ بنک کے قیام کی اصولی منظوری بھی دی-بورڈ ممبرنعیم اعوان کی سربراہی میں قائم کمیٹی اس بنک کے قیام کے لئے جامع سفارشات پیش کرے گی -بورڈ نے پیسک ہاؤس کی تعمیر کے ریوائز پی سی ون کی منظوری دی، اجلاس میں سمال انڈسٹریل اسٹیٹ وزیر آباد اور سمال انڈسٹریل اسٹیٹ گوجرانوالہ کے ریوائز پی سی ون کی بھی منظوری دی گئی -

بورڈ نے پیسک کے ملازمین کیلئے یوٹیلیٹی الاؤنس کی منظوری دی، صوبائی وزیر صنعت و تجارت میاں اسلم اقبال نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ صوبے میں ہزاروں ایکڑ رقبے پر بننے والے صنعتی مراکز سے صنعتی انقلاب برپا ہوگا،انہوں نے کہا کہ  پنجاب میں سرمایہ کاری کے لئے بہترین ماحول پیدا کیا گیا ہے -صنعتی مراکز میں عالمی معیار کا انفراسٹرکچر فراہم کیا گیا ہے- میاں اسلم اقبال نے کہا کہ صنعتکاری کے عمل کو تیز کرکے روز گار کے مواقع بڑھائیں گے-صنعتی زونز کی 100فی صد آباد کاری کو یقینی بنائیں گے-

صوبائی وزیر نے ہدایت کی کہ انڈسٹریل اسٹیٹس میں برسوں سے خالی پلاٹوں پربھی صنعتی یونٹس لگا نے کیلئے اقدامات کئے جائیں -صنعتیں لگیں گی تو بے روزگاری اور غربت کے اندھیرے دور ہونگے، انہوں نے کہا کہ صنعتکاری کے عمل کو تیز کرنے کے لئے پیسک اپنا موثر کردار ادا کر ے-اجلاس میں سلانوالی میں آرٹیزن ویلج کے قیام کی منظوری دی گئی -اجلاس میں پیسک کے انتظامی اور مالی امور کی منظوری دی گئی -ایم ڈی پیسک مدثر ریاض ملک، ایڈیشنل سیکرٹری صنعت و تجارت اور بورڈ ممبران نے اجلاس میں شرکت کی-