صوبائی وزیر انسانی حقوق اعجاز عالم آگسٹین کی سیرت رحمت ا لعالمین کانفرنس میں خصوصی شرکت 

کانفرنس کا اہتمام قومی امن کمیٹی پاکستان برائے بین المذاہب ہم آہنگی نے ایوان اقبال میں کیا

صوبائی وزیر انسانی حقوق اعجاز عالم آگسٹین کی سیرت رحمت ا لعالمین کانفرنس میں خصوصی شرکت 

لاہور : لاہور کے ایوان اقبال کے آڈیٹوریم میں ایک عظیم الشان سیرت کانفرنس بعنوان:رحمت العالمین ﷺاور امن عالم: منعقد کی گئی ، جس میں جید علمائے کرام،سیاسی و سماجی شخصیات،پارلیمنٹرینز،مختلف مکاتب فکر کی نمایاں شخصیات کے ہمراہ صوبائی وزیر انسانی حقوق واقلیتی امور اعجاز عالم آگسٹین نے خصوصی طور پر شرکت کی۔ صوبائی وزیر اعجاز عالم آگسٹین نے اپنے خطاب کے دوران کہا کہ یہ بڑے اعزاز کی بات ہے کہ آقا دو جہان سرور کائنات حضرت محمد مصطفی ﷺ کی یا دمیں ہفتہ رحمت العالمین منا رہے ہیں جبکہ پاکستان کی تاریخ میں پہلی مرتبہ تحریک انصاف کے دور حکومت میں سرکاری سطح پراس طرح کی تقریبات منفرد اہمیت کی حامل ہیں ،درحقیقت بعض شر پسند عناصر ایسی حرکتوں میں مصروف ہیں۔

جن سے دنیا بھر میں موجود مسلمانوں کے ہمراہ مذہبی اقلیتوں کی بھی دل آزاری ہو رہی ہے تاہم ایسے نازک وقت میں وزیراعظم عمران خان کی ہدایت کے مطابق صوبہ بھر میں ہر سرکاری دفاتر وغیرہ میں حضرت محمد ﷺ کی شان بیان کی جائےگی کہ انہوں نے کیسے ساری زندگی محبت و امن کی تلقین کی۔انہوں نے کہا کہ بلا شبہ اللہ تعالیٰ نے حضرت محمد مصطفیٰ ﷺ کو تمام جہانوں کے لیے رحمت بناکر بھیجا اور ان ہی کے دور میں مدینہ اسلام کی پہلی فلاحی ریاست بنی تاہم ضرورت اس امر کی ہے کہ بنی پاک ﷺ کی زندگی کو سامنے رکھا جائے اور آپس میں پیار و محبت کو فروغ دیا جائے ناکہ نفرت کی آگ کو بھڑکایا جائے۔ وزیراعظم پاکستان عمران خان کا وژن ہے کہ نبی پاک ﷺکی تعلیمات پر عمل کرتے ہوئے پاکستان کو ایک ایسی اسلامی فلاحی ریاست بنایا جائے جدھر تمام شہریوں کو مساوی حقوق کی فراہمی یقینی بنائی جاسکے۔

اس حوالے سے اگر مذہبی اقلیتوں کے حقوق کی بات کیجائے تو موثر قانون سازی، معاشی استحکام، اعلی تعلیم کی فراہمی، دیگر مذاہب کی طرز پر سزا سے معافی، نفرت کے خلاف موثر کنٹرول مواد، مذہبی سیاحت کے فروغ اور نوجوانوں کو مہارت یافتہ بنائے جانے کے اقدامات کو دیکھ کر تحریک انصاف کی حکومت کا فلاحی ریاست میں مذہبی اقلیتوں کے برابری کے حقوق کی فراہمی کا موازنہ کیا جا سکتا ہے جبکہ ماضی میں صرف مسلم قیدیوں کو عید جیسے مذہبی تہواروں میں سزا سے معافی دی گئی تھی، لیکن پی ٹی آئی کی حکومت نے قانون سازی کے ذریعہ یہ ممکن بنادیا ہے کہ پنجاب کی تمام جیلوں میں ہندو¶ں، سکھوں اور دیگر اقلیتوں کے علاوہ عیسائی قیدیوں کو بھی ایسی سہولتیں فراہم کیجائیں ۔انہوں نے اس بات پر زور دیتے ہوئے کہاکہ ہم سب کو چاہیئے کہ اس ہفتہ میں نبی پاک ﷺ کی شان کھل کر بیان کریں اور جھوٹ،فریب اورنفرت وغیرہ کو ہمیشہ کے لئے خیر آباد کہہ دیں تاکہ ایک پر امن ملک کا خواب سچا ہو سکے۔