پنجاب میں ماحول دوست سیاحت کے فروغ کا معاہدہ

ایم او یو پر ٹی ڈی سی پی کے منیجنگ ڈائریکٹر اور صدر ایس ٹی ایف پی کے دستخط۔ ماحولیاتی تبدیلی کے تناظر میں پوری دنیا میں ایکوٹورازم پر کام ہو رہا ہے، تنویر جبار

پنجاب میں ماحول دوست سیاحت کے فروغ کا معاہدہ

لاہور :۔ ٹورازم ڈویلپمنٹ کارپوریشن پنجاب (ٹی ڈی سی پی) اور غیر سرکاری تنظیم سسٹینبل ٹورازم فاؤنڈیشن پاکستان(ایس ٹی  ایف پی) نے ایک مفاہمتی یاداشت پر دستخط کئے ہیں جس کے تحت دونوں ادارے پنجاب میں ماحول دوست سیاحت کے فروغ کے لئے مل کر کام کریں گے۔ ایم او یو پر ٹی ڈی سی پی کے منیجنگ ڈائریکٹر تنویر جبار اور صدر ایس ٹی ایف پی آفتاب الرحمان رانا نے دستخط کئے۔ معاہدے کے تحت ٹی ڈی سی پی ایکو ٹورازم کے فروغ کیلئے ایس ٹی ایف پی کے تجربے سے فائدہ اٹھائے گی۔ ایس ٹی ایف پی تونسہ بیراج سمیت دریائے سندھ کے مختلف مقامات پر ایکو ٹورازم کے فروغ کا کام کر رہی ہے۔ بالخصوص امریکی ادارے یو ایس ایڈ کے اشتراک سے دریائے سندھ میں معدومی کے خطرے سے دوچار اندھی ڈولفن کے تحفظ کے لئے ٹھوس اقدامات کئے گئے۔ اس موقع پر گفتگو میں تنویر جبار نے ایس ٹی ایف پی کے پروگراموں کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ آلودگی سے پاک ماحول میں سیاحت زیادہ پرکشش ہوتی ہے اور عالمگیر ماحولیاتی تبدیلی کے تناظر میں پوری دنیا میں ایکوٹورازم کے فروغ پر کام ہو رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ایم او یو کے تحت ایس ٹی ایف پی پنجاب ٹورازم کارپوریشن کے سٹاف کو تربیت دے گی۔ اس اشتراک کا دائرہ کار بتدریج بڑھایا جائے گا۔ آفتاب رانا نے بھی ایم او یو کا خیرمقدم کرتے ہوئے کہا کہ دریائے سندھ کی اندھی ڈولفن کے تحفظ کے لئے جامع منصوبے کا فائدہ ہوا۔ اب دنیا میں صرف دریائے سندھ میں پائی جانے والی اندھی ڈولفنز کی تعداد میں نمایاں اضافہ ہوا ہے۔ اندھی ڈولفن کی زیادہ تعداد کا مطلب مستحکم سیاحت کا فروغ ہے۔ صدر ایس ٹی ایف پی نے اس عزم کا اظہار کیا کہ پنجاب میں اہم سیاحتی مقامات پر ماحولیاتی تحفظ یقینی بنایا جائے گا۔ اس حوالے سے ٹی ڈی سی پی کا تعاون خوش آئند ہے۔