پاکستان میں ہی نہیں بلکہ پوری دنیا میں مہنگائی کا سیلاب آیا ہوا ہے، وزیراعظم

 عوام کی مشکلات کا علم ہے، اعتماد رکھیں مشکلات سے نکالیں گے، وزیراعظم عمران خان کا للہ جہلم دو رویہ شاہراہ کا سنگ بنیاد رکھنے کی تقریب سے خطاب

پاکستان میں ہی نہیں بلکہ پوری دنیا میں مہنگائی کا سیلاب آیا ہوا ہے، وزیراعظم

اسلام آباد:.وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ پاکستان میں ہی نہیں بلکہ پوری دنیا میں مہنگائی کا سیلاب آیا ہوا ہے، عوام کی مشکلات کا علم ہے، اعتماد رکھیں مشکلات سے نکالیں گے، عام آدمی کیلئے بڑا پیکیج لا رہے ہیں، اپنے آپ کو شیر شاہ سوری کہلوانے والوں کے دور میں بنائی جانے والی سڑکوں سے ہم سستی سڑکیں بنا رہے ہیں.

کورونا کی صورتحال اور موسمیاتی تبدیلی کے اثرات سے نمٹنے کیلئے ہماری حکمت عملی کو دنیا نے سراہا ہے، عالمی بینک کی رپورٹ کے مطابق پاکستان میں غربت میں کمی آئی ہے، اگلے 10 سال میں 10 ڈیم بنائیں گے، ہماری حکومت نے آنے والی نسلوں کا سوچا ہے اگلے الیکشن کا نہیں، دنیا انتخابات کو شفاف بنانے کیلئے جدید ٹیکنالوجی استعمال کر رہی ہے، حیرت ہے اپوزیشن ای وی ایم سے کیوں ڈری ہوئی ہے، حکومت کی کارکردگی سے انہیں خطرہ ہے کہ ان کی سیاسی دکانیں بند ہو جائیں گی۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے منگل کو للہ۔جہلم دو رویہ شاہراہ کا سنگ بنیاد رکھنے کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ وزیراعظم نے کہا کہ دنیا بھر میں انتخابات کو صاف و شفاف بنانے کیلئے جدید ٹیکنالوجی کے استعمال میں اضافہ ہو رہا ہے لیکن حیرت ہے کہ اپوزیشن کو الیکٹرانک ووٹنگ مشین (ای وی ایم) سے کیا مسئلہ ہے اور وہ اس سے کیوں ڈری ہوئی ہے، اب تو ٹیکنالوجی یہاں تک پہنچ چکی ہے کہ کوئی وزیراعظم، وزیراعلیٰ اور وزیر جھوٹ نہیں بول سکتا کیونکہ تمام تر اعداد و شمار اور معلومات انٹرنیٹ پر موجود ہیں،

جب حکومت برسر اقتدار آئی تو کتنا بڑا خسارہ اور قرضے اور قرضوں پر کتنی قسطیں ادا کرنا تھیں، سب سے بڑا خسارہ ہمیں ملا لیکن ہم نے ملک کو سنبھالا دیا، ہماری پوری کوشش ہے کہ ملک میں طویل مدتی ترقی لانی ہے، وہ ملک ترقی کرتے ہیں جو آنے والی نسلوں کا سوچتے ہیں، آنے والے انتخابات کا سوچنے والا ملک ترقی نہیں کرتا، چین کی ترقی کا راز طویل مدتی منصوبہ بندی ہے اور چین کی قیادت نے اپنے لوگوں کو غربت سے نکالنے اور ترقیاتی منصوبوں کا سوچا، انتخابی فائدے کیلئے میٹرو پر اربوں روپے لگانے سے قوم ترقی نہیں کرتی، ہماری حکومت نے آنے والی نسلوں کا سوچا ہے، اگلے انتخابات کا نہیں۔