جنوبی پنجاب سیکرٹریٹ سیاسی نمبر گیم کے لیے قائم نہیں کیا گیا : ہاشم جواں بخت

ایڈیشنل چیف سیکرٹری کمیٹی کوجنوبی پنجاب سیکرٹریٹ کے مجوزہ پلان سے آگاہ کریں: وزیر خزانہ پنجاب

  جنوبی پنجاب سیکرٹریٹ سیاسی نمبر گیم کے لیے قائم نہیں کیا گیا : ہاشم جواں بخت

لاہور:  جنوبی پنجاب سیکرٹریٹ سیاسی نمبر گیم کے لیے قائم نہیں کیا گیا اس کا مقصد مقامی سطح پر عوام کو سہولیات کی فراہمی اور انتظامی امور میں بہتری ہے۔ایڈیشنل چیف سیکرٹری کمیٹی کوجنوبی پنجاب سیکرٹریٹ کے مجوزہ پلان سے آگاہ کریں۔ تعیناتیوں کی تفصیلات، اخراجات اور کام کے طریقہ کار پر مکمل بریفنگ دی جائے۔الگ سیکرٹریٹ کی موجودگی میں بھی درخواست گزاروں کے مسائل حل نہ ہوں تو سیکرٹریٹ کا قیام بے سود ہے۔ محکمہ صنعت نئے کاروبار کے آغاز کے لیے پیشہ ورانہ تربیت اور آسان قرضوں کی فراہمی کے ساتھ استفادہ کرنے والوں کو سمیڈا کی طرز پر کاروبار کا ماڈل بھی مہیا کرے تاکہ پہلی بار کاروبار کرنے والوں کے لیے نقصان کے امکانات کو کم سے کم کیا جا سکے۔صاف پانی کی فراہمی مقامی حکومتوں کی ذمہ داری ہے۔ واٹر سپلائی کی تمام سکیمیں جلد از جلد بحال کی جائیں۔

یہ ہدایات وزیر خزانہ پنجاب مخدوم ہاشم جواں بخت نے آج کابینہ کی سٹینڈنگ کمیٹی برائے فنانس اینڈ ڈویلپمنٹ کے 41ویں اجلاس کی صدارت کے دوران دیں۔ اجلاس میں مختلف محکموں کی جانب سے 14سے زائد سفارشات پیش کی گئیں جن میں جنوبی پنجاب سیکرٹریٹ کے نئے اخراجات(SNE)اور ہاؤس رینٹ میں اضافے،یکم جولائی سے 30ستمبر تک کورونا کی روک تھام کے لیے سامان کی خریدو فروخت اور درآمد پر انفراسٹریکچر ڈویلپمنٹ سیس میں چھوٹ، پبلک پرائیویٹ پارٹنر شپ پروجیکٹس کو سیلزٹیکس سے استثنیٰ، میرج ہالز کو ٹیکس میں مزید ریلیف، پبلک ہیلتھ انجینئرنگ ڈیپارٹمنٹ کے تحت ایم اینڈ آر ونگ کا قیام اور ملتان ڈویلپمنٹ اتھارٹی میں بھرتیوں کی منظوری شامل تھیں۔ جنوبی پنجاب سیکرٹریٹ کے قیام کے لیے اضافی اخراجات کی سفارش، کورونا سے متعلقہ سامان کی درآمد پر انفراسٹریکچر ڈویلپمنٹ سیس کے خاتمے اور پبلک پرائیویٹ پارٹنر شپ پروجیکٹس کو پانچ سال تک سیلز ٹیکس آن سروسز سے مستثنیٰ قرار دینے کی سفارشات کی متفقہ طور پر منظوری دے دی گئی۔

اس کے علاوہ محکمہ سپیشلائز ہیلتھ اینڈ میڈیکل ایجوکیشن کے سابقہ ایجنڈوں جن میں بہاولنگر اور سیالکوٹ میں ماں اوربچے کی صحت کے لیے سینٹر ز کے قیام کی بھی منظوری دی گئی  میرج ہالز، ایم اینڈ آر ونگ کے قیام کی سفارشات موخر کر دی گئی جبکہ ملتان ڈویلپمنٹ اتھارٹی کو سفارش کردہ بھرتیوں میں سے صرف ایک تہائی بھرتیوں کی اجازت دی گئی، بھرتیوں کے انتخاب کی ذمہ داری سیکرٹری ہاؤسنگ اینڈ پبلک ہیلتھ انجینئرنگ کے سپرد کی گئی۔ کمیٹی کی جانب سے ایم ڈی اے کی کارکردگی پر عدم اطمینان کا اظہار کیا گیا۔ صوبائی وزیر نے سیکرٹری ہاؤسنگ اینڈپبلک ہیلتھ انجینئرنگ ڈیپارٹمنٹ کو ہدایت کی کے وہ اتھارٹی کے تمام مالی معاملات اور سکیموں کا جائزہ لیں اور کمیٹی کوکارکردگی کی صورتحال سے آگاہ کریں۔

ایم آر آئی ونگ کو محکمہ لوکل گورنمنٹ کی ذمہ داری قرار دیا گیا۔  صوبائی وزیر نے کہا کہ میرج ہالز کو پہلے سے سیلز ٹیکس میں رعایت دی جا چکی ہے اس حوالے سے مزید کوئی بھی فیصلہ کورونا کی آئندہ صورتحال کو مدنظر رکھتے ہوئے لیا جائے گا۔ اجلاس میں پنجاب روزگار سکیم میں گارنٹی کے معاملات اور کم قیمت گھروں کے لیے آسان قرضوں صوبائی سطح پر فراہمی کے لیے فنڈز کی فراہمی کو بھی زیر بحث لایا گیا۔ سیکرٹری صنعت نے اجلاس کو بتایا کہ سکیم کے اجراء کے لیے بنک آف پنجاب کے علاوہ نیشنل بنک آف پاکستان کو بھی شامل کیا جا رہا ہے۔ کمیٹی میں روزگار سکیم میں کورونا سے متاثرہ کاروبار کی بحالی کوترجیحی بنیادوں پر شامل کرنے اور کم قیمت گھروں کی تعمیر کے لیے فنڈز کی فراہمی کا اُصولی فیصلہ بھی لیا گیا۔ صوبائی وزیر نے سیکرٹری ہاؤسنگ اینڈ پبلک ہیلتھ انجینئرنگ کو ہدایت کی کہ وہ آئندہ اجلاس میں کمیٹی کو قیمت گھروں کی تعمیر پروگرام کی مکمل تفصیلات سے آگاہ کریں۔