افغانستان کا مسئلہ سب کو مل کرحل کرنا ہوگا،افغانستان کو تنہاچھوڑا گیا تو مختلف بحران جنم لیں گے، وزیراعظم عمران خان

افغانستان کا مسئلہ سب کو مل کرحل کرنا ہوگا،افغانستان کو تنہاچھوڑا گیا تو مختلف بحران جنم لیں گے، وزیراعظم عمران خان

دوشنبے :وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ افغانستان کا مسئلہ سب کو مل کرحل کرنا ہوگا، افغانستان کو اس مرحلہ پر تنہا نہیں چھوڑا جا سکتا،افغانستان کو تنہاچھوڑا گیا تو مختلف بحران جنم لیں گے، شنگھائی تعاون تنظیم کے اجلاس میں شرکت میرے لئے باعث فخر ہے۔ وزیراعظم نے ان خیالات کا اظہار جمعہ کو یہاں شنگھائی تعاون تنظیم ایس سی او کے 20 ویں سربراہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے کہاکہ تجارت، سرمایہ کاری اور روابط کے فروغ کے لئے ایس سی او ایک اہم پلیٹ فارم ہے، مواصلاتی رابطوں سے خطے میں مثبت تبدیلی آئے گی۔ وزیراعظم نے کورونا وبا کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ اس سے عالمی معیشتیں متاثر ہوئی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ماحولیاتی تبدیلی دوسر ااہم چیلنج ہے جو دنیا کو درپیش ہے ،پاکستان نے ماحولیاتی تبدیلی کے اثرات سے نمٹنے کے لئے بلیئن ٹری منصوبہ شروع کیا ہے۔

وزیراعظم نے افغانستان کی صورتحال کاذکرکرتےہوئے کہاکہ اب افغانستان کی حقیقت دنیا کو تسلیم کرنا ہو گی، ‏افغانستان کا مسئلہ سب کو مل کر حل کرنا ہوگا،یہ افغان عوام کے ساتھ کھڑے ہونے کا وقت ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان نے دہشتگردی کیخلاف جنگ میں اہم کردار ادا کیا، پاکستان نے دہشتگردی کی جنگ میں 80 ہزار جانوں کی قربانی دی ہے،ہماری معیشت کو دہشتگردی کیخلاف جنگ میں نقصان پہنچا ۔

وزیراعظم عمران ِخان نے کہا کہ ‏موسمیاتی تبدیلی دنیا کیلئے بڑا چیلنج ہے، ‏ہم نے بہتر ماحول کے فروغ کیلئے شجرکاری مہم شروع کی ہے،ہم نے ملک کے ہر اس حصے میں پودے لگائے جہاں سبزہ نہیں تھا۔ انہوں نے کہا کہ شجرکاری مہم کو دنیا کے مختلف ممالک میں سراہا گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ‏مسئلہ کشمیراقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق حل ہونا چاہیے۔انہوں نے کہاکہ افغانستان کو انسانی بحران، خوراک، بنیادی اشیاودیگر چیلنجز کا سامنا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم ‏آزاد خودمختار فلسطین کی حمایت کرتے ہیں