محکمہ آبپاشی پنجاب اگلے ایک ماہ میں نہروں کے کناروں پر دس لاکھ سے زائد پودے لگائے گا: سیکرٹری آبپاشی سیف انجم

ہر ایگزیکٹیو انجینئر اپنی نہروں پر ایک ماہ میں دیسی اقسام کے بیس ہزار پودے لگائے گا

 محکمہ آبپاشی پنجاب اگلے ایک ماہ میں نہروں کے کناروں پر دس لاکھ سے زائد پودے لگائے گا: سیکرٹری آبپاشی سیف انجم

لاہور: محکمہ آبپاشی اگلے ایک ماہ کے دوران اپنی نہروں کے کناروں پر 10 لاکھ سے زیادہ پودے لگائے گا۔ آبپاشی کا ہر ایگزیکٹیو انجینئر اپنے متعلقہ ڈویژن میں کم از کم 20 ہزار پودے لگانے کا پابند ہو گا۔یہ بات سیکرٹری آبپاشی سیف انجم نے اپنے چیف انجینئرز سے ہفتہ وار اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔ ابتدائی طور پر مہم تین ماہ جاری رہے گی لیکن پہلے ایک ماہ کے دوران مجموعی طور پر صوبے بھر میں 10 لاکھ سے زائد پودے لگائے جائیں گے۔

یاد رہے کہ 2 ستمبر کو سپریم کورٹ نے اپنے فیصلے میں تمام صوبائی حکومتوں کو ہدایات جاری کی تھیں کہ نہروں کے کناروں پرشجر کاری کی جائے اور صوبائی آبپاشی محکمہ جات اس بات کا بیڑہ اٹھائیں۔ اسی ٖفیصلے کی روشنی میں سیکرٹری آبپاشی نے ہدایات جاری کی ہیں کہ ترجیحی بنیادوں پر نہروں کے کنارے دیسی اقسام مثلا نیم، کیکر اور شیشم کی شجر کاری کے جائے اور نہروں کے دونوں کناروں پر مناسب فاصلہ رکھ کرپودے لگائے جائیں۔

سیکرٹری نے مزید ہدایت کی کہ مہم کی کامیابی کے لئے بڑے سائز کے پودوں کی شجر کاری کی جائے۔ سیکرٹری نے تمام چیف انجینئرز، ایس ایز اور ایکس اینز کو ہدایت کی اس مہم کو ایک صدقہ جاریہ اور قومی فریضہ سمجھ کر تمام ممکن وسائل بروئے کار لائے جائیں۔سیکرٹری آبپاشی سیف انجم نے متعلقہ سیکشن کو ہدایت کی کہ اس مقصد کی غرض سے فوری طور پر بجٹ کا اجرا کیا جائے اور پورے کینال نیٹ ورک اور ریسٹ ہاوسز پر شجر کاری کا ورک پلان تیار کیا جائے۔

اس ضمن میں تمام کینال ایڈمنسٹریشن ڈویژن کی کارکردگی کا جائزہ لینے کے ہفتہ وارمیٹنگ کی جائیں گی۔ اس مہم سے نہ صرف نہروں کے کنارے مضبوط ہونگے اور نہروں میں شگاف پڑنے کے واقعات میں کمی آئے گے بلکہ اس سے نہروں کی خوبصورتی میں اضافہ بھی ہو گااور ماحولیاتی آلودگی میں بھی کمی آئے گی۔