سکول کھلنے کے بعد ایس او پیز پر عملدرآمد کے حوالے سے اساتذہ اور ایجوکیشنل مینیجرز کی ٹریننگ کا افتتاح

تاکہ جب بھی سکول دوبارہ کھلیں تو سکول ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ اور اساتذ? کی تیاری مکمل ہو , احکامات کی خلاف ورزی کرنے والے سکولوں کے خلاف فوری اور سخت ایکشن لیتے ہوئے سیل کیا جائے گا

سکول کھلنے کے بعد ایس او پیز پر عملدرآمد کے حوالے سے اساتذہ اور ایجوکیشنل مینیجرز کی ٹریننگ کا افتتاح

لاہور:صوبائی وزیر تعلیم پنجاب ڈاکٹر مراد راس کا قائداعظم اکیڈمی فار ایجوکیشنل ڈولپمنٹ (قائد) ہیڈکوارٹرز وحدت روڈ لاہور میں اہم پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہنا تھا کہ سکول کھلنے کے بعد ایس او پیز پر عملدرآمد کے حوالے سے اساتذہ اور ایجوکیشنل مینیجرز کی ٹریننگ کا افتتاح کر دیا ہے تاکہ جب بھی سکول دوبارہ کھلیں تو سکول ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ اور اساتذ? کی تیاری مکمل ہو. طلباء اور اساتذہ کی صحت و سلامتی سے زیادہ کچھ عزیز نہیں اور سکول کھولنے کے حوالے حکومتی احکامات کی خلاف ورزی کرنے والے سکولوں کے خلاف فوری اور سخت ایکشن لیتے ہوئے سیل کیا جائے گا. وزیر تعلیم پنجاب ڈاکٹر مراد راس کا کہنا تھا کہ سکول کھولنے کے حوالے سے ختمی فیصلہ ستمبر کے پہلے ہفتے میں ہونے والے اجلاس میں ہو گا. جلد بازی یا کسی بھی دباو کے تحت ایسے فیصلے نہیں لے سکتے جن سے ہمارے طلباء کی جان کو خطرہ ہو.

وزیر سکول ایجوکیشن پنجاب ڈاکٹر مراد راس کا یہ بھی کہنا تھا کہ تعلیمی سرگرمیاں بحال ہونے کے حوالے سے ایس او پیز ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن، یونیسیف و دیگر عالمی اداروں کی ہدایات کو مد نظر رکھتے ہوئے تیار کر لئے گئے ہیں اور اگلے ایک ماہ کے دوران اساتذ? کو ان پر عملدرآمد کے حوالے سے بھرپور ٹریننگ دی جائے گی. ڈاکٹر مراد راس نے یہ بھی کہا کہ سکول کھلنے کے بعد ہمیں طلباء کو مختلف شفٹوں میں بلانا ہو گا تاکہ وائرس سے متاثر ہونے کے امکانات کو کم سے کم کیا جا سکے. ٹریننگ کے لائحہ عمل کے مطابق بات کرتے ہوئے صوبائی وزیر تعلیم پنجاب ڈاکٹر مراد راس نے کہا کہ پہلے تمام اضلاع کے سی ای او صاحبان کو ٹریننگ دی جائے گی اور پھر اس طرح ان سے نچلے شعبوں کو بھی ایس او پیز کے حوالے تفصیلی طور پر آگاہ کیا جائے گا.

ڈاکٹر مراد راس کا یہ بھی کہنا تھا کہ حکومت کی جانب سے سب کچھ کھول دینے کا مطلب یہ نہیں کہ کرونا وائرس کا خطرہ ختم ہو گیا. تمام معاملات زندگی کی اجاَت اس لئے دی گئی ہے تاکہ ملک کے معاشی معاملات مزید خراب نہ ہوں لیکن کرونا وائرس کے پھیلاؤ کا خطرہ اب بھی موجود ہے. آخر میں ڈاکٹر مراد راس کا یہ کہنا تھا کہ ہمیں ایسا لائحہ عمل تشکیل دینا ہے جو شعبہ یعلیم سے جڑے تمام پہلوؤں کے لئے کار آمد ہو.