میاں اسلم اقبال کا نئے سیمنٹ پلانٹس لگانے کے لئے این او سی کے اجراء میں تاخیر کے عمل پر سخت اظہار ناراضگی

سیمنٹ انڈسٹری میں سرمایہ کاری میں سرخ فیتے کی رکاوٹ کسی صورت برداشت نہیں،متعلقہ ادارے سرمایہ کاروں کے لئے مسائل پیدا کرنے کی انہیں سہولتیں دیں، صوبائی وزیر کا اجلاس سے خطاب

میاں اسلم اقبال کا نئے سیمنٹ پلانٹس لگانے کے لئے این او سی کے اجراء میں تاخیر کے عمل پر سخت اظہار ناراضگی

لاہور : صوبائی وزیر صنعت و تجارت میاں اسلم اقبال کی زیر صدارت آج سول سیکرٹریٹ میں اجلاس منعقد ہوا جس میں سیمنٹ انڈسٹری میں سرمایہ کاری اور نئے سیمنٹ پلانٹس لگانے پر پیش رفت کا جائزہ لیا گیا-صوبائی وزیر صنعت و تجارت میاں اسلم اقبال نے نئے سیمنٹ پلانٹس لگانے کے لئے این او سی کے اجراء میں تاخیر کے عمل پر سخت ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ سیمنٹ انڈسٹری میں سرمایہ کاری میں سرخ فیتے کی رکاوٹ کسی صورت برداشت نہیں، ٹائم لائن کے اندر کام مکمل نہ کرنے والے محکمے کو جواب دینا پڑے گا-صوبائی وزیر نے کہا کہ نئی سرمایہ کاری لانا ملک وقوم کی بقاکا مسئلہ ہے، سرمایہ کاروں کو سہولتوں کی فراہمی ادا روں کی ذمہ داری ہے-

انہوں نے کہا کہ ایک سیمنٹ پلانٹ لگنے سے اربوں روپے کی سرمایہ کاری اور روزگار کے نئے مواقع پیدا ہوتے ہیں -متعلقہ ادارے سرمایہ کاروں کے لئے مسائل پیدا کر نے کی بجائے انہیں سہولتیں دیں - صوبائی وزیر نے ہدایت کی کہ متعلقہ ادارے مربوط انداز سے کام کریں اور سرمایہ کاروں کو ون ونڈو کی سہولت دیں - نئے سیمنٹ پلانٹس لگانے کے لئے قانون سازی کی ضرورت ہے تو پوری کریں گے-

صوبائی وزیر نے متعلقہ محکموں کو اپنے کام بروقت مکمل کرنے کی ہدایت کی، سیکرٹری صنعت و تجارت کیپٹن ریٹائرڈ ظفر اقبال نے اجلاس کو بتایا کہ نئے سیمنٹ پلانٹس لگانے کے لئے محکمہ صنعت و تجارت کے پاس  23 درخواستیں آئیں ہیں، تمام درخواستیں چھان بین کے بعد متعلقہ محکموں کو بھجوادی گئی ہیں -سیکرٹری صنعت و تجارت،ڈی جی انڈسٹریز،ڈی جی ماحولیات، ڈی جی معدنیات اور دیگر متعلقہ محکموں کے افسران  نے اجلاس میں شرکت کی-