صوبائی وزیر آشفہ ریاض نے اپنے دفتر میں این جی اوز کے نمائندگان سے ملاقات کی

ہ 2018 میں جب یہ ادارہ مجھے ملا تو اس کی جمود زدہ کیفیت میں ارتعاش اور ترقیاتی ہلچل پیدا کرنے کے لیے لامتناہی کوشوں کا آغاز کیا گیا۔ ملکی سرمایے کا درست معنوں میں استعمال، تحفظ، بچت اور قومی مفادہماری اولین ترجیح رہی ہے

صوبائی وزیر آشفہ ریاض نے اپنے دفتر میں این جی اوز کے نمائندگان سے ملاقات کی

لاہور: صوبائی وزیر آشفہ ریاض نے اپنے دفتر میں این جی اوز کے نمائندگان سے ملاقات کی۔ اس دوران انہوں نے اپنی گفتگو میں کہا کہ 2018 میں جب یہ ادارہ مجھے ملا تو اس کی جمود زدہ کیفیت میں ارتعاش اور ترقیاتی ہلچل پیدا کرنے کے لیے لامتناہی کوشوں کا آغاز کیا گیا۔ ملکی سرمایے کا درست معنوں میں استعمال، تحفظ، بچت اور قومی مفادہماری اولین ترجیح رہی ہے۔ یہی وجہ ہے کہ ہم نے کچھ سابقہ پراجیکٹس کو کھلے دل سے جاری رکھا جن میں ڈے کیر سنٹرز ہیں۔

یاد رہے کہ سابقہ ادوار میں 2012 تا2018 پورے پنجاب میں صرف 68ڈے کیرز بنائے گئے لیکن2018 سے ان کا دائرہ کاربڑھاتے ہوئے ہم اپنے اس دوسالہ دور حکومت میں پنجاب میں اس وقت 137 DCsبنارہے ہیں جن میں سے 37 فنکشنل ہوچکے ہیں۔82 آپریشن کے لیے بالکل تیار ہیں جبکہ 18زیرتکمیل ہیں۔ڈے کیرز کے قیام سے متعلق شرائط اور درخواست دینے کے عمل کو نہایت آسان بنادیا گیا ہے تاکہ تمام ورکنگ لیڈیز اوران کے بچیان سنٹرز کے ثمرات سے استفادہ حاصل کرسکیں۔ آشفہ ریاض کا کہنا تھا کہ ملک و قوم کی ترقی میں عورت کی عملی شمولیت کے لیے تمام ملحقہ اداروں کے ساتھ ملکر باہمی تعاون و اشتراک سے کام کیا جارہا ہے۔