سردار عثمان بزدار کے متعلق یہ تاثر دینا کہ وہ کسی کی بات نہیں سنتے، غلط فہمی تو ہو سکتی ہے مگر حقیقت نہیں: فیاض الحسن چوہان

جو وزیر اعلیٰ اتحادی جماعتوں کے اراکین کے ساتھ ایک ٹیم کی طرح کام کر رہا ہو، اس کا اپنی پارٹی کے رکن اسمبلی سے اختلاف کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا: وزیرِ اطلاعات پنجاب

سردار عثمان بزدار کے متعلق یہ تاثر دینا کہ وہ کسی کی بات نہیں سنتے، غلط فہمی تو ہو سکتی ہے مگر حقیقت نہیں: فیاض الحسن چوہان

وزیرِ اطلاعات پنجاب فیاض الحسن چوہان نے پاکستان تحریکِ انصاف کے کچھ ناراض حکومتی ارکان کے وزیرِ اعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار کے خلاف بیانات پر اپنے ایک ویڈیو پیغام میں کہا ہے کہ سردار عثمان بزدار صاحب نے بطور وزیرِ اعلیٰ عوام اور پارلیمنٹیرینز پر وزیر اعلیٰ ہاوس کے دروازے کھولے اور تمام اراکین اسمبلی کو اعتماد دلایا کہ ہر معزز ممبر اپنے حلقے کا وزیر اعلیٰ ہے۔

فیاض الحسن چوہان نے کہا کہ سردار عثمان بزدار کے متعلق یہ تاثر دینا کہ وہ کسی کی بات نہیں سنتے، غلط فہمی تو ہو سکتی ہے مگر حقیقت نہیں۔ اُنہوں نے کہا کہ جو وزیر اعلیٰ اتحادی جماعتوں کے اراکین کے ساتھ ایک ٹیم کی طرح کام کر رہا ہو، اس کا اپنی پارٹی کے رکن اسمبلی سے اختلاف کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا۔ وزیرِ اطلاعات پنجاب نے کہا کہ سردار عثمان بزدار صوبائی اسمبلی کے ایک ایک رکن کو اس کے نام سے جانتے ہیں اور ان کے ساتھ مسلسل رابطے میں رہتے ہیں۔

عثمان بزدار صاحب سے پہلے یہاں 10 سال حکومت کرنے والے اپنے اراکین اسمبلی کو نہ جانتے، نہ پہچانتے تھے۔ انہوں نے کہا کہ جناب خواجہ داؤد محمد سلیمانی نے نجی ٹی وی چینل پر جن پارلیمنٹیرینز کا ذکر کیا، وہ تمام حضرات گزشتہ روز وزیر اعلیٰ پنجاب سے ملاقات میں سردار عثمان بزدار کی قیادت پر مکمل اعتماد کا اظہار کر چکے ہیں۔ مزید برآں، وزیرِ اعلیٰ پنجاب مذکورہ حلقہ پی پی 285، ڈیرہ غازی خان 1، کا بذاتِ خود دورہ کر چکے ہیں۔ اس حلقے میں 2 ارب روپے کی لاگت سے 49 ترقیاتی سکیموں پر بھر پور انداز میں کام جاری ہے اور اں تک ان سکیموں پر 60 کروڑ روپے خرچ بھی کئے جاچکے ہیں۔

وزیرِ اطلاعات نے مزید بتایا کہ وزیر اعلیٰ پنجاب نے اپریل 2020 میں ڈی جی خان کے دورے کے دوران مذکورہ حلقے کی تعمیر و ترقی کیلئے کروڑوں روپے کے مزید منصوبوں کا اعلان کیا، جن کی تفصیلات ریکارڈ کا حصہ ہیں۔ فیاض الحسن چوہان نے کہا کہ پورے صوبے میں مساوی تعمیر و ترقی کے منصوبوں پر کام جاری ہے اور وزیر اعلیٰ پنجاب انتظامیہ سے باقاعدگی سے ترقیاتی کاموں کی رپورٹ لیتے ہیں تاکہ کوئی ضلع ترقی کے اس سفر میں پیچھے نہ رہ جائے۔