پاکستان میں نظریاتی سیاست ختم ہوچکی ہے،جہانگیر اشرف وینس

 عالمی ایجنڈے کے تحت پاکستان کے حالات کوخانہ جنگی کی طرف لے جایا جا رہا ہے  پیپلز پارٹی، مسلم لیگ اور تحریک انصاف تینوں اسٹیبلشمنٹ کی مدد سے آگے آئیں،میڈیا سے گفتگو

لاہور: ڈیمو کریٹک پارٹی کے صدر جہانگیر اشرف وینس ایڈووکیٹ نے کہا ہے کہ پاکستان میں نظریاتی سیاست ختم ہوچکی ہے اور مفادات کی سیاست غالب آچکی ہے نظریاتی سیاست ختم ہونے سے ملک میں ایک خلیج پیدا ہوگئی ہے ،حکمران عالمی ایجنڈے کے تحت پاکستان کے حالات خانہ جنگی کی طرف لے کر جا رہے ہیں ،غریب عوام کو خوشحال بنانے اور ملک کو ترقی کی راہ پر گامزن کرنے کے خوشنما نعرے کی بنیاد پر سیاست چمکانے والوں نے عوام پر مہنگائی اور بے روز گاری مسلط کرکے انہیں غربت کی دلدل میں دھنسا دیا ہے،ملک میں اب موروثی سیاست کا راج ہے ہر پارٹی سربراہ کی کوشش ہے کہ اقتدار اس کی اگلی نسل تک منتقل ہو جائے اور ان جماعتوں میں شامل دیگر رہنما پارٹی قیادت کی غلامی کر رہے ہیں۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کیا۔ڈیمو کریٹک پارٹی کے صدر جہانگیر اشرف وینس ایڈووکیٹ نے کہا کہ پیپلز پارٹی، مسلم لیگ اور تحریک انصاف تینوں اسٹیبلشمنٹ کی مدد سے آگے آئیں ،ان کے پاس اپنا کوئی سیاسی پروگرام نہیں، پاکستان تحریک انصاف چوں چوں کا مربہ ہے آپ دیکھیں کہ 80 فیصد وہی لوگ ہیں جو ماضی میں کسی نہ کسی سیاسی جماعت میں رہے،یہ سب نظریات کی بجائے اپنے مفادات کیلئے آئے ہیں، ملک میں مفادات کی سیاست ہو رہی ہے نظریات کی کسی کو فکر نہیں، سیاسی جماعتیں اقتدار کے حصول کی جنگ لڑ رہی ہیں کسی کو بھی ملک وقوم کا مفاد عزیز نہیں ،اگر کسی بھی پارٹی کو ملک وقوم کا مفاد عزیز ہوتا تو آج ملک تباہی کی دھانے نہ پہنچتا۔