ملک میں کورونا کے مثبت کیسسز کا تناسب ساڑھے چار فیصد سے بڑھ کر ساڑھے نو فیصد ہو گیا ہے، این سی او سی

ملک میں کورونا کے مثبت کیسسز کا تناسب ساڑھے چار فیصد سے بڑھ کر ساڑھے نو فیصد ہو گیا ہے، این سی او س

ملک میں کورونا کے مثبت کیسسز کا تناسب ساڑھے چار فیصد سے بڑھ کر ساڑھے نو فیصد ہو گیا ہے، این سی او سی

اسلام آباد : ملک میں کورونا کے مثبت کیسسز کا تناسب ساڑھے چار فیصد سے بڑھ کر ساڑھے نو فیصد ہو گیا ہے۔ہر 100 ٹیسٹ کے نمونہ جات میں سے مثبت آنے والے مریضوں کی شرح کا تناسب بتاتا ہے کہ ملک میں وائرس کس تیزی سے پھیل رہا ہے۔ہفتہ کو این سی او سی میں وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر فیصل سلطان نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ ملک میں کورونا وئرس تیزی سے پھیل رہا ہے اور مثبت کیسسز کا تناسب ساڑھے چار فیصد سے بڑھ کر ساڑھے نو فیصد تک پہنچ گیا ہے جو کہ خطرناک ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ بیرون ممالک جن میں افریقہ اور جنوبی امریکہ سے آنے والے مسافروں میں چونکہ وائرس کی قسم تھوڑی مختلف ہے تو اس ضمن میں ایسے ممالک سے آنے والے مسافروں پر پابندی کے اطلاق کا نوٹس آئندہ کچھ گھنٹوں میں کر دیا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ کورونا ویکسین کی اضافی کھیپ اسی مہینے کے آخر تک پہنچ جائے گی جس سے زیادہ سے زیادہ لوگوں کو اس وائرس سے بچائو میں مدد مل سکے گی۔

انہوں نے مزید بتایا کہ ملک بھر میں ستر سال سے زائد عمر کے شہریوں کیلئے ویکسینیشن سینٹرز میں واک ان ڈیسکس کا قیام کیا گیا ہے تاکہ بزرگ شہری بنا کسی انتظار کے جا کر مروجہ طریقہ کار کے تحت ویکسینیشن کروا سکیں۔معاون خصوصی برائے صحت کا کہنا تھا کہ گزشتہ دنوں وائرس کے پھیلاؤ میں کمی کیلئے پابندیوں کا اطلاق کیا گیا لیکن عوام میں صحت کے مروجہ اصولوں پر عملدرآمد کے حوالے سے فقدان دیکھنے میں آ رہا ہے انہوں نے عوام اور صوبائی انتظامیہ سے اپیل کی کہ ایس او پیز پر عملدرآمد کو یقینی بنایا جائے تاکہ اس مہلک وائرس سے بچا جا سکے.