صوبائی وزیر انسانی حقوق اعجاز عالم آگسٹین کی مولانا عبدالخبیر آزاد سے ملاقات

امن،بھائی چارہ اور مذہبی ہم آہنگی کو فروغ دینے پر زور تحریک انصاف کی حکومت معاشرے میں سے منفی سماجی رویے کو ختم کرنے کے لئے پرعزم ہے:صوبائی وزیر انسانی حقوق  

صوبائی وزیر انسانی حقوق اعجاز عالم آگسٹین کی مولانا عبدالخبیر آزاد سے ملاقات

لاہور: صوبائی وزیر انسانی حقوق واقلیتی امور اعجاز عالم آگسٹین کی امام بادشاہی مسجد مولانا سید عبدالخبیر آزاد سے انسانی حقوق کے کمپ آفس میں ملاقات ہوئی، ملاقات میں  امن اور مذہبی ہم آہنگی کو فروغ دینے کے حوالے سے تبادلہ خیا ل کیا گیا۔ صوبائی وزیر اعجاز عالم نے کہاکہ خواہاں ہیں کہ تحریک انصاف کے دور حکومت میں اسلامی تعلیمات اور آئین پاکستان کے مطابق دہشتگردی اور معاشرے میں بڑھتے ہوئے بیگاڑ کو ختم کرنے کے لئے اپنی صفوں میں اتحاد قائم کرنے کے ساتھ امن کو فروغ دیاجا سکے جبکہ پاکستان کو صحیح معنوں میں ایک اسلامی،اصلاحی اور فلاحی ریاست بنانے کے لئے مل کر آگے بڑھنے کی ضرورت ہے اور اس کے لئے علمائے کرام کے کردار کو نظر انداز نہیں کیا جا سکتا اور یقینی طور پر ملکر آگے بڑھنے سے اتحاد، ہم آہنگی اور رواداری کے فروغ کے پیغام کے ذریعے پاکستان کو فلاحی ریاست بنانے میں اہم اقدام ثابت ہو سکتا ہے۔

صوبائی وزیر انسانی حقوق نے کہا کہ تمام مذاہب میں سب سے پہلے انسانیت کا ذکر آتا ہے اور انسانی حقوق کی بات کی جاتی ہے بلکہ یہ کہنا غلط نہ ہو گا کہ جس معاشرے میں انسانیت نہ ہو وہ کبھی پروان نہیں چڑھ سکتا۔ دین اسلام سمیت تمام مذاہب احترام انسانیت اخوت،محبت اور امن کا درس دیتے ہیں جبکہ قرآن پاک اور بائبل میں پیار اور امن کا مشترکہ پیغام ہے،تمام مذاہب کے لوگوں کو سوسائٹی کے ساتھ ملکر ایسے واقعات کی روک تھام کو یقینی بنانا ہوگا جسکی بناء پر معاشرے میں بیگاڑ پیدا ہو رہے ہیں۔

مولانا عبدالخبیر آزاد نے کہاکہ پاکستان میں جس طرح مسلمانوں کے حقوق ہیں،ایسے ہی دیگر مذاہب کے بسنے والے مسیحی،ہندو،سکھ بھائیوں کے حقوق ہیں تاہم محکمہ انسانی حقو ق و اقلیتی امور کے پلیٹ فارم سے تمام شہریوں کی جان و مال،عزت وآبرو کی حفاطت یقینی بنا نا یقینی طور پر قابل تعریف اقدام ہے۔انہوں نے اس بات پر زور دیتے ہوئے کہا کہ ہمیں اپنے اپنے مذاہب پر کاربند رہتے ہوئے ان لوگوں کا تعاقب کرنا ہے جو آپس میں نفرتیں پھیلاتے ہیں اور دوسرے مذاہب کے خلاف توہین آمیز رویہ اپناتے ہیں، بلا شبہ اخلاقیات اور انسانی حقوق ہر مذہب کا لازمی جزو ہیں۔