چینی کے کمرشل استعمال کیلئے فروخت پر پابندی پر سختی سے عملدرآمدکرایا جائے، چیف سیکرٹری کا حکم

چینی کی قیمتوں میں خود ساختہ اضافہ بلا جواز ہے، مصنوعی مہنگائی پیدا کرنے والوں کیخلاف سخت ایکشن لیا جائے گاسہولت بازاروں میں پارکنگ، صفائی اور دیگر سہولیات مہیا کی جائیں تاہم غیر ضروری اخراجات نہ کئے جائیں، اجلاس سے خطاب

 چینی کے کمرشل استعمال کیلئے فروخت پر پابندی پر سختی سے عملدرآمدکرایا جائے، چیف سیکرٹری کا حکم

لاہور: چیف سیکرٹری پنجاب نے انتظامی افسران کو ہدایات کی ہے کہ چینی کے کمرشل استعمال کیلئے فروخت پر ایک ماہ کیلئے عائد کی گئی پابندی پر سختی سے عملدرآمد یقینی بنایا جائے اور شوگر ملوں کو چینی صرف گھریلو صارفین کے استعمال کیلئے فروخت کی اجازت دی جائے۔ انہوں نے کہا کہ چینی کی قیمتوں میں از خود اضافہ بلا جواز ہے اور مصنوعی قلت پیدا کر کے نرخوں میں ا ضافہ کیا جا رہا ہے جس کیخلاف سخت ایکشن لیا جائے گا۔ انہوں نے یہ ہدایت پرائس کنٹرول کے حوالے سے منعقد اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کی۔

خوراک، زراعت اور انڈسٹریز کے محکموں کے ایڈمنسٹریٹوسیکرٹریز، چیئرمین پی آئی ٹی بی،سی ای او اربن یونٹ، ایڈیشنل آئی جی سپیشل برانچ، کمشنر اور ڈپٹی کمشنر لاہور نے اجلاس میں شرکت کی جبکہ تمام ڈویژنل کمشنرز اور ڈپٹی کمشنرز ویڈیو لنک کے ذریعے شریک ہوئے۔اجلاس میں صوبہ میں اشیاء ضروریہ بالخصوص آٹا اور چینی کے نرخوں اور دستیابی، سہولت بازاروں میں انتظامات اور ذخیرہ اندوزوں اور گرانفروشوں کیخلاف کارروائی کا جائزہ لیا گیا۔

اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے چیف سیکرٹری نے کہا کہ وزیر اعلیٰ پنجاب کی ہدایت کے مطابق عام آدمی کو ریلیف کی فراہمی ترجیح ہے اور اس مقصد کے حصول کیلئے سب کو ملکر ٹیم کے طور پر کام کرنا ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کی جانب سے قیمتوں کی نگرانی کیلئے کئے جانیوالے اقدامات کے باعث صارفین کو ریلیف ملتا نظر آنا چاہئے۔ چیف سیکرٹری نے انتظامی افسران سے سہولت بازاروں میں آٹے اور چینی کی قیمتوں اور دستیابی بارے دریافت کیا۔

انہوں نے حکم دیا کہ سہولت بازاروں میں صارفین کیلئے پارکنگ، صفائی اور دیگر سہولیات مہیا کی جائیں تاہم غیر ضروری اخراجات کسی صورت نہ کئے جائیں۔ اجلاس کو بریفنگ میں بتایا گیا کہ وزیر اعظم کی ہدایت پرصوبہ میں اشیاء ضروریہ کی مقررہ نرخوں پر دستیابی یقینی بنانے کیلئے گرانفروشوں اور ذخیرہ اندوزوں کیخلاف کریک ڈاؤن بھرپور طریقے سے جاری ہے اور وہاڑی میں 475ٹن چینی اور30ہزار کلو گھی برآمد کر لیا گیا۔ صوبے میں 196سہولت بازاروں کو فعال کر دیا گیا ہے جہاں پر اشیاء خورونوش بشمول آٹا اور چینی وافر مقدار میں رعائتی نرخوں پر دستیاب ہیں۔