حکومت کا رمضان المبارک میں مستحق خاندانوں کو ریلیف دینے کیلئے براہ راست مالی امداد دینے کی اصولی منظوری

کورونا وباء کے پیش نظر پنجاب بھر میں رمضان بازار نہ لگانے کا فیصلہ،رمضان پیکیج کے تحت مالی امداد کا طریقہ کار اوردیگر امور جلد طے کئے جائیں گے

حکومت کا رمضان المبارک میں مستحق خاندانوں کو ریلیف دینے کیلئے براہ راست مالی امداد دینے کی اصولی منظوری

لاہور: صوبائی وزیر اوقاف سید سعید الحسن شاہ نے کہا ہے کہ وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدارنے رمضان المبارک میں مستحق خاندانوں کو ریلیف دینے کیلئے براہ راست مالی امداد دینے کی اصولی منظوری دی ہے جبکہ کورونا وباء کے پیش نظر پنجاب بھر میں رمضان بازار نہ لگانے کا فیصلہ کیا گیا- انہوں نے کہاکہ حکومت مستحق خاندانوں کو رمضان پیکیج کے تحت مالی امداد دے گی-وزیراعلیٰ عثمان بزدارکی ہدایت پر رمضان پیکیج کے تحت مالی امداد کا طریقہ کار اوردیگر امور جلد طے کئے جائیں گے -

انہوں نے کہاکہ حکومت زیادہ سے زیادہ لوگوں کو ریلیف دینا چاہتی ہے- موجودہ صورتحال کے پیش نظر پنجاب حکومت نے رمضان بازار نہ لگانے کا فیصلہ کیا ہے -وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے اشیائے ضروریہ کی قیمتوں میں استحکام کیلئے مؤثر اقدامات کی ہدایت کی ہے۔ انہوں نے کہاکہ کورونا وباء کے پیش نظر عوام کوحقیقی ریلیف دینے کے لئے متحرک اور فعال طریقے سے کام کرنا ہو گا- رمضان المبارک میں مصنوعی مہنگائی پیدا کرنے کی کسی صورت اجازت نہیں دی جائے گی۔

عوام کو اشیائے ضروریہ مقررکردہ نرخوں پر فراہم کرنے کیلئے تمام انتظامی اختیارات استعمال کئے جائیں گے۔ اشیائے ضروریہ کے نرخوں میں ناجائز اضافہ کسی صورت برداشت نہیں کیا جائے گا۔ انہوں نے کہاکہ عام آدمی کو ریلیف فراہم کرنا ہماری حکومت کا ایجنڈا ہے اور صوبے کے عوام کو ریلیف دینے کیلئے ہر اقدام کیا جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ پنجاب حکومت کورونا کے متاثرہ مریضوں کے علاج معالجے میں مصروف عمل ڈاکٹروں اوردیگر عملے کو ایک ماہ کی اضافی تنخواہ دے گی اورہیلتھ پروفیشنلز کو یہ اضافی تنخواہ رواں ماہ سے ملے گی-پنجاب حکومت انسداد کورونا مہم کے دوران جاں بحق ملازم کے لواحقین کوتنہا نہیں چھوڑے گی-خدانخواستہ اگر کوئی ملازم جاں بحق ہوتا ہے تو لواحقین کو شہدا پیکیج کے تحت مالی امداددی جائے گی-انہوں نے کہاکہ لاک ڈاؤن میں توسیع کے حوالے سے حکومتی اقدامات پر ہر صورت عملدرآمد کرایا جائے گا-کسی کو حکومتی اقدامات کی خلاف ورزی کی اجازت نہیں دی جا سکتی-انہوں نے کہاکہ اوپن کی گئی انڈسٹریز کو ایس او پیز پر عملدرآمد کرنا ہوگا-

ایس او پیز کی خلاف ورزی پر متعلقہ انڈسٹری کے خلاف کارروائی ہوگی-پنجاب میں 4نئی لیبز تیار ہوچکی ہیں اورپنجاب ہیلتھ کیئر کمیشن کی منظوری کے بعد نئی لیبز کو چند روز میں فنکشنل کر دیا جائے گا-پنجاب میں تقریباً 56ہزار ٹیسٹنگ کٹس موجود ہیں اوراب تک پنجاب حکومت 46ہزار سے زائد لوگوں کے ٹیسٹ کرچکی ہے- ہمارا ہر قدم صوبے کے عوام کے تحفظ کے لئے اٹھ رہاہے-آزمائش کی گھڑی میں ثابت قدم رہتے ہوئے چیلنجز سے نمٹیں گے-