صوبائی وزیر زراعت سید حسین جہانیاں گردیزی کی زیر صدارت پنجاب ایگریکلچرل ریسرچ بورڈکے43 ویں اجلاس کا انعقاد

پنجاب ایگریکلچر ل کمرشل پیمانے پر ایسے منصوبہ جات متعارف کروائے جن سے کاشتکاروں کی پیداواری لاگت میں کمی اور منافع میں اضافہ ہو: وزیر زراعت سید حسین جہانیاں گردیزی

صوبائی وزیر زراعت سید حسین جہانیاں گردیزی کی زیر صدارت پنجاب ایگریکلچرل ریسرچ بورڈکے43 ویں اجلاس کا انعقاد

 لاہور:   وزیر اعظم عمران خان شعبہ زراعت میں ریسرچ کی فنڈنگ کو مزید بڑھانے میں خصوصی دلچسپی رکھتے ہیں کیونکہ کاشتکاروں کو درپیش مسائل کا حل جدید ریسرچ میں پوشیدہ ہے۔ اس حوالے سے پنجاب ایگریکلچرل ریسرچ بورڈ ریسرچرز کے باہمی تعاون کو فروغ دیتے ہوئے کمرشل پیمانے پر ایسے منصوبہ جات متعارف کروارہا ہے جن سے کاشتکاروں کی پیداواری لاگت میں کمی اور منافع میں اضافہ ہو گا۔

ان خیالات کا اظہار صوبائی وزیر زراعت پنجاب سید حسین جہانیاں گردیزی نے پنجاب ایگریکلچرل ریسرچ بورڈ کے 43 ویں اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔ اجلاس میں وزیر زراعت نے پارب کی ایگزیکٹو کمیٹی کے ممبران کی منظوری دیتے ہوئے پرائیویٹ سیکٹر بالخصوص ترقی پسند کاشتکاروں کی نمائندگی میں اضافہ کرنے کی ہدایت کی۔ صوبائی وزیر نے پنجاب ایگریکلچرل ریسرچ بورڈ کے ممبران کے اتفاق ِ رائے سے پارب کی ملکیت پرانے پلاٹ کے حصول اور نئی عمارت کی تعمیر کے لئے اقدامات تیز کرنے کی ہدایت کی۔

انہوں نے پراجیکٹ کی تکمیل پر پارب کی فنڈنگ سے جاری شدہ جدید زرعی مشینری و آلات کی مانیٹرنگ، ویلیو اور ایگریڈیشن کرنے کے احکامات جاری کئے اور جاری شدہ منصوبہ جات کی جانچ کے لئے ٹیکنیکل کمیٹی کے قیام پراتفاق کیا۔ صوبائی وزیر نے زرعی سائنسدانوں اور ترقی پسند کاشتکاروں کے بین الاقوامی دوروں کی فنڈنگ بڑھانے سے بھی اتفاق کیا اورکہا کہ غیر ملکی ریسرچرز کو پاکستان مدعو کرکے کسانوں کے لیے تربیتی پروگرام شروع کیے جائیں۔

قبل ازیں چیف ایگزیکٹو پنجاب ایگریکلچرل ریسرچ بورڈ ڈاکٹر عابد محمود نے بریفنگ دی۔اجلاس میں بورڈ ممبران و اراکینِ پنجاب اسمبلی سید خاور علی شاہ، مسز شاہدہ احمد،ترقی پسند کاشتکار خالد محمود کھوکھر، رابعہ سلطان اورجاوید سلیم قریشی کے علاوہ محکمہ لائیو سٹاک، زراعت، پلاننگ و ڈویلپمنٹ،جنگلات اور خزانہ کے نمائندگان نے شرکت کی۔