پاکستان میں قائم برطانوی کونسل کے نمائندگان کی صوبائی وزیر اعجا ز عالم آگسٹین سے ملاقات

ملاقات میں برطانوی کونسل کے پروگرام آواز II پر تفصیلی بات چیت,  صوبائی وزیر نے انسانی حقوق کے تحفظ کو یقینی بنانے میں برطانوی کونسل کے کردار کو سراہا 

پاکستان میں قائم برطانوی کونسل کے نمائندگان کی صوبائی وزیر اعجا ز عالم آگسٹین سے ملاقات

لاہور: صوبائی وزیر اقلیتی امور اور انسانی حقوق اعجاز عالم آگسٹین سے کنٹری ڈائریکٹر بر طانوی کونسل عامر رمضان کی سربراہی میں انسانی حقوق کے کیمپ آفس میں وفد نے ملاقات کی ، جس میں برطانوی کونسل کے آوازii پروگرام پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا۔ عامر رمضان نے صوبائی وزیر کو دوران بریفنگ بتایا کہ آواز ii پروگرام کو برطانوی کونسل دیکھ رہی ہے جبکہ یہ یو کے فنڈڈ پروگرام ہے۔اس پروگرام کے مطابق پنجاب اور کے پی کے میں مقامی کمیونٹیوں کے ساتھ مل کر بچوں، خواتین، نوجوانوں، مذہبی اقلیتوں کے حقوق کے تحفظ کے فروغ کے لئے کام کیا جا رہا ہے جبکہ اصل مقصد اسپیشل افراد، پسماندہ اور کمزور طبقات سے منسلک افراد کو با اختیار بنانا شامل ہے ۔

انہوں نے مزید بتایا کہ اس منصوبے کا مقصد بچوں سے لیجانیوالی جبری مزدوری، جبری شادیوں،کسی بھی قسم کے تشدد کی روک تھام،معاشرتی ہم آہنگی اور رواداری کو فروغ دینا ہے جبکہ کے پی کے اور پنجاب کے 22 اضلاع میں یہ پروگرام جاری ہے۔ صوبائی وزیر اعجاز عالم آگسٹین نے برطانوی کونسل کے اقدامات کو سراہا اور امید ظاہر کی کہ آواز ii پروگرام انسانی حقوق اور مذہبی اقلیتوں کے تحفظ کے حوالے سے ایک سنگ میل ثابت ہو سکے گا۔صوبائی وزیر نے وفد کو بتایا کہ حکومت پنجاب اپنی بین الاقوامی ذمہ داریوں سے بخو بی آگاہ رہتے ہوئے ہر قسم کے تشدد کی روک تھام، سزائے موت کے قوانین، خواتین کے حقوق اور بالخصوص بچوں سے جنسی زیادتی جیسے واقعات کے حوالے سے موثر قانون سازی یقینی بنارہی ہے جبکہ دنیا بھر میں وزیراعظم عمران خان کی قائدانہ صلاحیتوں کے باعث ملک پاکستان ایک ایسا پُرامن ملک بن کر ابھر رہا ہے ،جدھر دنیا بھر سے سرمایہ کار اور سیاح کھینچے چلے آرہے ہیں جبکہ پاکستان نے ہمیشہ پیار و محبت کی بات کی مگر بھارت کیجانب سے کشمیر میں جاری انسانی حقوق کی سنگین ترین خلاف ورزیاں اور اپنے ہی ملک میں متنازعہ شہریت بل جیسے نفرت انگیز اقدامات کی وجہ سے امن کو شدید خطرہ لاحق ہے تاہم وقت کی ضرورت ہے کہ مسئلہ کشمیر کے حل اور امن قائم کرنے کےلئے بین الاقوامی تنظیمیں اپنا بھرپور مثبت کردار ادا کریں۔

انہوں نے پنجاب بھر میں انسانی حقوق بالخصوص مذہبی اقلیتوں کے لئے کئے جانیوالے اقدامات پر روشنی ڈالتے ہوئے بتایا کہ مذہبی اقلیتوں کے لئے ملازمت کے مواقع، مذہبی اقلیتی نوجوانوں کے لئے میرٹ پر وظائف اور مالی معاونت، نکاح کو ڈیجیٹل طریقے سے رجسٹرڈ کرنا، گھریلو تشدد اور مذہب کو جبری طور پر تبدیلی کے خلاف قانون سازی،مذہبی اقلیتی قیدیوں کے لئے سزاﺅں میں کمی و معافی، کمیٹیوں کی تشکیل توہین مذہب کے قانون کا غلط استعمال، خواتین پر تیزاب پھینکنے اور گھریلو تشدد کے خلاف قانون سازی اور خواجہ سراءکمیونٹی کے تحفظ کے لئے بے شمار اقدامات کیئے جا رہے ہیں ۔ وفد نے انسانی حقوق کے تحفظ کے لئے حکومت پنجاب کی کاوشوں کو سراہا اور مستقبل میں بھی انسانی حقوق کے تحفظ کے لیئے اپنی بھرپور معاونت کا یقین دلایا۔اس موقع پر سیکرٹری انسانی حقوق ندیم الرحمان،سربراہ ٹریٹی سیل پنجاب ،یاسمین زیدی ٹیم لیڈر آوازii،صوبائی مینیجر سعد باجوہ اور دیگر متعلقہ افراد موجود تھے۔