انگریزی ہمارا کامپلیکس، اردو ہماری پہچان ہے: سجل علی

انگریزی ہمارا کامپلیکس، اردو ہماری پہچان ہے: سجل علی

پاکستانی اداکارہ سجل علی نے سوشل میڈیا  پر انگریزی اور اردو زبان پر جاری بحث میں حصہ لیتے ہوئے اپنا موقف بھی سامنے رکھ دیا۔ سجل نے اپنی انسٹاگرام اسٹوری میں پی ٹی وی کے شہرہ آفاق ڈرامے ’ان کہی‘ کی یاد تازہ کرتے ہوئے ایک کِلپ شیئر کیا جس میں انگریزی کو کامپلیکس جبکہ اردو کو ہماری پہچان قرار دیا گیا۔ 1982 میں نشر کیے جانے والے ڈرامے ’ان کہی‘ کے سجل کی جانب سے شیئر کیے گئے کِلپ میں جمشید انصاری کہتے ہیں کہ ’انگریزی ہمارا کامپلیکس ہے جبکہ اردو ہماری پہچان ہے، لیکن ہوتا یہ ہے کہ ہم بعض دفعہ دونوں میں گڑ بڑ کر جاتے ہیں۔

ڈرامے میں ٹِمی کا کردار ادا کرنے والےجمشید انصاری اپنا ڈائیلاگ جاری رکھتے ہوئے کہتے ہیں کہ ’کبھی ہمیں پہچان کا کامپلیکس ہوجاتا ہے کبھی کامپلیکس کی پہچان۔ یاد رہے کہ سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو وائرل ہوئی جس میں خواتین جو خود کو ایک ریسٹورنٹ کا مالک بتاتی ہیں وہ اس ریسٹورنٹ کے منیجر کو بلا کر اس کے ساتھ انگریزی میں بات چیت کرتی ہیں جبکہ منیجر کی انگریزی اتنی اچھی نہیں ہوتی جس پر وہ اس کا مذاق بناتی ہیں اور تمسخر اڑاتے ہوئے ہنستی بھی ہیں۔ بعدازں ریستوران کی جانب سے ایک بیان جاری کیا گیا ہے جس میں انہوں نے کہا ہے کہ انہیں اپنی ٹیم کے ایک رکن کے ساتھ ’ہلکی پھلکی گفتگو‘ کو لوگوں کی جانب سے غلط انداز میں لیے جانے پر افسوس اور حیرانی ہے۔