حکومت نے رمضان المبارک میں مہنگائی کے خاتمے اور اشیائے خوردنوش کی وافر فراہمی کی حکمت عملی طے کر لی، راجہ راشد حفیظ

اس مقصد کیلئے صوبے بھر کے انتظامی افسران کو مطلوبہ نتائج دینے کا پابند بنایا جا رہا ہے تاکہ منڈیوں اور تجارتی مراکز میں عوام کو سستی اور معیاری اشیائے خورد و نوش وافر مقدار میں میسر ہوں

حکومت نے رمضان المبارک میں مہنگائی کے خاتمے اور اشیائے خوردنوش کی وافر فراہمی کی حکمت عملی طے کر لی، راجہ راشد حفیظ

لاہور:صوبائی وزیر خواندگی و غیر رسمی بنیادی تعلیم راجہ راشد حفیظ نے کہا ہے کہ رمضان المبارک میں مہنگائی، ذخیرہ اندوزی اور ملاوٹ کے تدارک کے موثر و نتیجہ خیز اقدامات زیر عمل لائے جائیں گے۔ اس مقصد کیلئے صوبے بھر کے انتظامی افسران کو مطلوبہ نتائج دینے کا پابند بنایا جا رہا ہے تاکہ منڈیوں اور تجارتی مراکز میں عوام کو سستی اور معیاری اشیائے خورد و نوش وافر مقدار میں میسر ہوں۔ اس حوالے سے پنجاب بھر میں سہولت بازار اور خصوصی رمضان بازار لگانے کی تیاریاں مکمل ہو چکی ہیں۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے اپنے دفتر میں منعقدہ کھلی کچہری میں عوام سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ راجہ راشد حفیظ نے کہا کہ حکومت نے صوبے بھر کی یکساں تعمیر و ترقی پر توجہ مرکوز کر رکھی ہے۔ قومی خزانے سے فنڈز کے منصفانہ، شفاف اور نتیجہ خیز استعمال سے عوام کو سہولیات ان کی دہلیز پر بہم پہنچائی جا رہی ہیں۔ انہو ں نے کہا کہ گذشتہ سالوں کے تجربات کو سامنے رکھتے ہوئے اس مرتبہ رمضان المبارک کے دوران مہنگائی کے زیادہ موثر سدباب کیلئے اضافی اقدامات اٹھانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ رمضان بازاروں میں عوام کو معیاری آٹا سستے داموں ملے گا اور اس امر کو یقینی بنایا جائیگا کہ ڈیمانڈ اینڈ سپلائی میں کوئی فرق نہ آنے پائے۔ اسی طرح چینی، چاول، دالیں،کھجور، بیسن اور سبزیاں و پھل بھی ارزاں نرخوں پر فراہم کرنے کی حکمت عملی طے پا چکی ہے۔

صوبائی وزیر نے مستحق اور غریب عوام کیلئے گھروں کی فراہمی کے سلسلے کے آغاز پر وزیر اعظم عمران خان کو مبارکباد دیتے ہوئے کہا کہ پاکستان تحریک انصاف کی حکومت اپنے وعدوں کی تکمیل پر گامزن ہے۔ عوام کو پتہ چل رہا ہے کہ کون کھوکھلے نعروں کی سیاست کرتا رہا اور کون اپنے نعروں اور وعدوں پر عمل کر رہا ہے۔ راجہ راشد حفیظ نے عوام کے مسائل سنے اور ان کے حل کیلئے موقع پر ہی احکامات جاری کئے۔ دریں اثناء صوبائی وزیر نے اپنے حلقہ انتخاب کی مختلف یونین کونسلوں میں جاری ترقیاتی کاموں کا جائزہ بھی لیا اور متعلقہ اداروں کو ہدایت کی کہ فنڈز کے شفاف و منصفانہ استعمال کے ساتھ ساتھ ان منصوبوں کی بروقت تکمیل کو بھی یقینی بنایا جائے۔