حکومت پنجاب کا غیر قانونی کنڈا جات کے خلاف کریک ڈاؤن کا فیصلہ

پرچیزنگ ایجنٹوں کیلئے بھی شوگر فیکٹریز کنٹرول ایکٹ میں ترمیم ، غیر قانونی کنڈا قائم کرنے کی سزا تین سال قید 50 لاکھ جرمانہ ہے: کین کمشنر پنجاب محمد زمان وٹو

حکومت پنجاب کا غیر قانونی کنڈا جات کے خلاف کریک ڈاؤن کا فیصلہ

لاہور : حکومت پنجاب نے آئندہ کرشنگ سیزن میں گنے کے غیر قانونی کنڈا جات کے خلاف سخت کریک ڈاؤن کا فیصلہ کیا ہے۔ اس ضمن میں شوگر فیکٹریز کنٹرول ایکٹ 1950 میں ترمیم بھی کی گئی ہے۔ کین کمشنر پنجاب محمد زمان وٹو نے کہا ہے کہ غیر قانونی کنڈا قائم کرنے اور چلانے کی سزا تین سال قید اور 50 لاکھ روپے جرمانہ ہے۔ شوگر فیکٹریز کنٹرول ایکٹ 1950 میں ترمیم کرتے ہوئے پرچیزنگ ایجنٹ کو 1 کروڑ روپے سیکورٹی یا بینک گارنٹی ادا کرنے کا پابند بھی کیا گیا ہے۔ پرچیزنگ ایجنٹ کیلئے ضرروی قرار دیا گیا ہے کہ وہ صرف اسی جگہ سے گنا خرید سکے گا جس جگہ کیلئے لائسنس جاری ہوا ہوگا۔ علاوہ ازیں پرچیزنگ ایجنٹ جس مل کا نامزد کردہ ہوگا اس مل کی کین پرچیز رسید بھی جاری کرنے کاپابند ہوگا۔