مخدوم ہاشم جواں بخت کی ایوان وزیر اعلیٰ پنجاب میں 50ویں پی این سٹاف کورس کے شرکاء کے وفد سے ملاقات

ملاقات میں صوبائی وزیر تعلیم مراد راس، چیف سیکرٹری پنجاب جواد رفیق، ایڈیشنل چیف سیکرٹری جنوبی پنجاب محکمہ پولیس، محکمہ زراعت، صحت اور متعلقہ محکموں کے سیکرٹری صاحبان نے کی شرکت

مخدوم ہاشم جواں بخت کی ایوان وزیر اعلیٰ پنجاب میں 50ویں پی این سٹاف کورس کے شرکاء کے وفد سے ملاقات

لاہور: وزیر خزانہ پنجاب مخدوم ہاشم جواں بخت نے آج ایوان وزیر اعلیٰ پنجاب میں 50ویں پی این سٹاف کورس کے شرکاء کے وفد سے ملاقات کی۔ ملاقات میں صوبائی وزیر تعلیم مراد راس، چیف سیکرٹری پنجاب جواد رفیق، ایڈیشنل چیف سیکرٹری جنوبی پنجاب محکمہ پولیس، محکمہ زراعت، صحت اور متعلقہ محکموں کے سیکرٹری صاحبان نے کی شرکت۔ ملاقات میں  کورس کے شرکاء کوملکی ترقی کے لیے حکومت پنجاب کے انفرادی اقدامات اور سماجی و اقتصادی صورتحال پر تفصیلی بریفنگ دی گئی۔

اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے صوبائی وزیر نے کورس کے شرکاء کو بتایا صوبے سے غربت کاخاتمہ اور صحت اورتعلیم کی سہولیات تک رسائی موجودہ حکومت کا بنیادی ایجنڈہ ہے۔زرعی صوبے کی حیثیت سے پنجاب میں زیادہ تر لوگوں کا روزگار زراعت سے منسلک ہے  اس لیے زرعی شعبہ کو بھی اسی تناظر میں دیکھا جا رہا ہے۔ زراعت کے شعبہ میں جدت کے فروغ کے ذریعے پیداوار میں اضافے کو یقینی بنایا جا رہا ہے۔

موسمی تغیرات پر کنٹرول کے لیے ٹھوس اور پائیدار اقدامات اٹھائے جا رہے ہیں۔صوبے سے غربت کے خاتمے کے لیے ہیومن کیپیٹل ڈویلپمنٹ رواوی ریور جیسے میگا پروجیکٹس متعارف کروائے جا رہے ہیں۔روزگار سکیم کے تحت آ سان قرضوں کی فراہمی بیروزگاری میں کمی کے لیے اہم کردار ادا کرے گی۔ مہنگائی پر کنٹرول کے لیے ہنگامء بنیادوں پر کام جاری ہے۔ پہلی بار حکومتی سطح پر  دوہرے نظام تعلیم کے خاتمے کے لیے سنجیدہ اقدامات لیے جا رہے ہیں۔

جنوبی پنجاب کی محرومیوں کا ازالہ کیا جا رہا ہے۔خطے میں سروس ڈیلیوری کی بہتری کے لیے الگ سیکرٹریٹ قائم کر دیا گیا ہے کو حکومت کی جانب سے جنوبی پنجاب کے عوام کی ریلیف کے لیے سنگ میل ثابت ہو گا۔بجٹ کی رنگ فنانسنگ جنوبی پنجاب کی ترقی میں اہم کردار ادا کرے گی۔ صوبائی وزیر نے کورونا کے دوران حکومت پنجاب کے موثراقدامات کا خصوصیت کے ساتھ ذکر کرتے ہوئے محکمہ صحت کی کارکردگی اور بجٹ میں حکومت پنجاب کے ٹیکس ریلیف پیکج کو قابل ستائش قرار دیا۔

صوبائی وزیر نے شرکاء کو بتایا کہ ٹیکس ریلیف پیکج کا مقصد معاشی سرگرمیوں کا فروغ کورونا کے معاشی اثرات سے بحالی ہے۔کورس کی شرکاء کی جانب سے سوال و جواب کے سلسلہ کے اختتام پر فریقین کی جانب سے آپس میں یادگاری شیلڈز کا تبادلہ کیا گیا۔ کورس کے شرکاء نے حکومتی اراکین اور بیوروکریسی کے نمائندگان کے ساتھ گروپ فوٹو بھی بنوایا۔