پنجاب میں انسداد پولیو مہم کا آغاز26اکتوبر سے ہوگا، ایک کروڑ94لاکھ بچوں کو قطرے پلانے کا ہدف مقرر

 پولیو کے خلاف مہم کیساتھ ساتھ ای پی آئی کوریج بہتر بنانے پر خصوصی توجہ دی جائے۔صوبائی وزیر صحت کی ہدایت ڈپٹی کمشنرز اضلاع میں انسداد پولیوسرگرمیوں کی خود نگرانی کریں، 100فیصد کوریج یقینی بنائیں، کوتاہی برداشت نہیں: چیف سیکرٹری

 پنجاب میں انسداد پولیو مہم کا آغاز26اکتوبر سے ہوگا، ایک کروڑ94لاکھ بچوں کو قطرے پلانے کا ہدف مقرر

لاہور: پنجاب میں انسداد پولیو مہم 26اکتوبرسے شروع ہوکر 31اکتوبر تک جاری رہے گی۔ مہم کے دوران پانچ سال تک کی عمر کے ایک کروڑ 94لاکھ بچوں کو پولیو ویکسیئن کے قطرے پلانے کا ہدف مقرر کیا گیا ہے۔ انسداد پولیو مہم کے سلسلے میں انتظامات کا جائزہ لینے کیلئے ایک اہم اجلاس صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر یاسمین راشد کی زیر صدارت چیف سیکرٹری آفس میں منعقد ہوا۔ اجلاس میں چیف سیکرٹری پنجاب،سیکرٹری پرائمری صحت،کمشنر لاہور ڈویژن اور متعلقہ افسران نے شرکت کی جبکہ ڈویژنل کمشنرز، ڈپٹی کمشنرز اور ڈسٹرکٹ ہیلتھ اتھارٹی کے چیف ایگزیکٹو آفیسرز ویڈیو لنک کے ذریعے شریک ہوئے۔  

اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے صوبائی وزیر صحت نے کہا کہ پولیوکے خاتمے کیلئے مشترکہ اور مسلسل کوششوں کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ پولیو کے خلاف مہم کیساتھ ساتھ ای پی آئی کوریج بہتر بنانے پر بھی خصوصی توجہ دی جائے۔ انہوں نے کہا کہ زیروڈوز بچوں کی اصل تعداد معلوم کرنے کیلئے پیدائش کی رجسٹریشن کا ڈیٹا اکٹھا کرنا ہوگا۔ چیف سیکرٹری نے ڈپٹی کمشنرز کو ہدایت کی کہ اضلاع میں انسداد پولیو مہم کی خود نگرانی کریں اور صورتحال کا باقاعدگی سے جائزہ لیتے رہیں،کسی قسم کی کوتاہی ہر گز برداشت نہیں کی جائے گی۔

انہوں نے کہا کہ صوبے میں نئے پولیو کیسز کا سامنے آناا ورانوائرنمنٹل سیمپلز میں وائرس کی موجودگی باعث تشویش ہے۔ڈی جی خان کی کچھ یونین کونسلز میں کوریج نہ ہونے پر چیف سیکرٹری نے کہا کہ انسداد پولیو مہم کے بعد کارکردگی کا جائزہ لیا جائے گا اور نا قص کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والے افسران کیخلاف کارروائی کی جائے گی۔ چیف سیکرٹری نے ہدایت کی کہ مائیکرو پلان کے ذریعے صوبہ میں پولیو کیخلاف مہم میں 100فیصد کوریج کو یقینی بنایا جائے۔ انہوں نے کہاکہ پولیو کے خاتمے کیلئے قومی جذبے سے کام کرنا ہوگا،تمام متعلقہ محکمے بین الاقوامی اداروں کے تعاون سے اس موذی مرض پر قابو پانے کیلئے فعال کردار ادا کریں۔ سیکرٹری پرائمری ہیلتھ نے اجلاس کو بتایا کہ ستمبر کی مہم میں تقریبا دو کروڑ بچوں کو پولیو ویکسیئن کے قطرے پلانے کا ہدف مقرر کیا گیا تھا جبکہ کامیابی کا تناسب 98فیصد رہا۔