موجودہ صورتحال تشویش ناک ہے اور تعلیمی اداروں کی بندش کا فیصلہ طلبا و اساتذہ کی زندگیوں کی خفاظت کے لئے لیا گیا

لیکن اس کا ہرگز یہ مطلب نہیں کہ طلبا سکول بند ہونے کے بعد سیر تفریح کے مقاصد کے لئے عوامی مقامات پر جا سکیں اس حوالے سے ہم نے تجویز دی ہے کہ سکولوں کو بند کرنے کے نوٹیفیکیشن میں یہ واضح ہونا چاہیے کہ طلبا کو مالز، پبلک پارکس، مارکیٹوں و دیگر عوامی تقاریب میں شرکت کی اجازت قطعاً نہیں ہو گی

موجودہ صورتحال تشویش ناک ہے اور تعلیمی اداروں کی بندش کا فیصلہ طلبا و اساتذہ کی زندگیوں کی خفاظت کے لئے لیا گیا

لاہور:صوبائی وزیر تعلیم پنجاب ڈاکٹر مراد راس کا قائد ہیڈکوارٹرز لاہور میں اہم پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہنا تھا کہ کرونا وائرس کے پھیلاو میں اضافے کو مدنظر رکھتے ہوئے پنجاب سمیت پاکستان بھر کے سکولوں کو اس ہفتے کے دوران  10 جنوری 2021 تک کے لئے بند کر دیا جائے گا.ڈاکٹر مراد راس نے سکول بند کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ موجودہ صورتحال تشویش ناک ہے اور تعلیمی اداروں کی بندش کا فیصلہ طلبا و اساتذہ کی زندگیوں کی خفاظت کے لئے لیا گیا ہے لیکن اس کا ہرگز یہ مطلب نہیں کہ طلبا سکول بند ہونے کے بعد سیر تفریح کے مقاصد کے لئے عوامی مقامات پر جا سکیں اس حوالے سے ہم نے تجویز دی ہے کہ سکولوں کو بند کرنے کے نوٹیفیکیشن میں یہ واضح ہونا چاہیے کہ طلبا کو مالز، پبلک پارکس، مارکیٹوں و دیگر عوامی تقاریب میں شرکت کی اجازت قطعاً نہیں ہو گی.

صوبائی وزیر تعلیم پنجاب ڈاکٹر مراد راس نے کہا کہ یہ بلکل بھی مناسب   اور قابل قبول نہیں کہ طلبا کو سکول سے چھٹیاں ہوں اور وہ عوامی مقامات پر گھومنے پھرنے چلے جائیں.یہ چھٹیاں مخض طلبا و اساتذہ کی خفاظت کے لئے دی جا رہیں ہیں لہذا  والدین اس بات کو ہر ممکن یقینی بنائیں کہ بچے گھروں پر رہیں اور وائرس سے بچاو کے لئے ہر ممکن خفاظتی اقدامات  پر عمل کریں۔ ڈاکٹر مراد راس نے مزید بتایا کہ اساتذہ کے سکول آنے کے حوالے سے یہ تجویز دی ہے کہ اساتذہ کو ہفتے میں مخض دو دن بلایا جائے۔ اگر ایک سکول میں دس اساتذہ فرائض سر انجام دے رہے ہیں تو ان میں سے آدھے ایک دن سکول آئیں اور باقی کے دوسرے دن۔

ڈاکٹر مرادراس نے کہا کہ پہلی جماعت سے آٹھویں جماعت تک کے طلبا کے امتخانات مارچ کے مہینے میں ہوں گے جبکہ نویں سے بارہویں جماعت کے طلبا کے امتحانات مئی یا  جون کے مہینے میں لئے جانے کی تجویز دی ہے۔ انہوں نے یہ بھی بتایا کہ اس بار طلبا کو چھٹیوں کے دوران کرنے کے لئے ہوم ورک دیا جائیگا.طلبا کے اگلی جماعت میں پروموشن کے لئے 50 فیصد گریڈنگ ان کو دئیے جانے والے ہوم ورک کے نتائج کے مطابق کی جائے گی اور باقی کے 50 فیصد کے لئے ایم سی کیوز کی طرز کے امتخانات لئے جائیں گے۔

آخر میں صوبائی وزیر تعلیم پنجاب ڈاکٹر مراد راس کا کہنا تھا کہ   موجودہ حالات کشیدہ ہیں،اگر ہم سب نے احتیاط نہ برتی تو کرونا وائرس کا پھیلاو خطرناک حد تک شدت اختیار کر سکتا ہے اور چھٹیاں دینے کا فیصلہ نجی اکیڈمیوں سمیت تمام تعلیمی اداروں پر لاگو ہو گا۔