پنجاب اسمبلی کی خواتین ارکان کا لڑکیوں کی شادی کےلئے کم از کم عمر 18سال مقرر کرنے کا مطالبہ، قرارد داد جمع

قرارداد پی ٹی آئی کی رکن سعدیہ سہیل،سمیرا بخاری اور خدیجہ عمر نے مشترکہ جمع کرائی, کم عمری کی شادیاں پڑھے لکھے،صحت مند اور خوشحال گھرانے کی راہ میں رکاوٹ ہیں

پنجاب اسمبلی کی خواتین ارکان کا لڑکیوں کی شادی کےلئے کم از کم عمر 18سال مقرر کرنے کا مطالبہ، قرارد داد جمع

لاہور(پ ر) پنجاب اسمبلی کی خواتین ارکان کا لڑکیوں کی شادی کےلئے کم از کم عمر 18سال مقرر کرنے کا مطالبہ،لڑکیوں کےلئے شادی کی عمر کم ازکم 18سال مقرر کرنے کے مطالبے کی قرارداد پنجاب اسمبلی میں جمع کرادی گئی۔قرارداد پی ٹی آئی کی رکن سعدیہ سہیل،سمیرا بخاری اور خدیجہ عمر نے مشترکہ جمع کرائی۔ خواتین ارکان نے کہا کم عمری کی شادیاں لڑکیوں کو بنیادی تعلیم سے محروم کردیتی ہیں۔کم عمری کی شادیاں پڑھے لکھے،صحت مند اور خوشحال گھرانے کی راہ میں رکاوٹ ہیں۔قائداعظم بھی کم عمری کی شادی کو سماجی برائی قراردے چکے ہیں۔قرارداد میں مطالبہ کیا گیا لڑکیوں کی شادی کی عمر 16سال سے بڑھاکر 18سال کی جائے۔کم عمری کی شادیوں کے حوالے سے قانون میں بنیادی ترمیم کی جائے۔