محکمہ انسانی حقوق و اقلیتی امور کیجانب سے 90شاہراہ قائداعظم پر کرسمس کی تقریب کا انعقاد

گورنر پنجاب چوہدری محمد سرور،صوبائی وزیر اعجاز عالم آگسٹین کی خصوصی شرکت  صوبائی وزراء، مذہبی قائدین،سیاسی و سماجی شخصیات کی بھی شرکت صوبائی وزیر اعجاز عالم کی اپیل پر وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کی صحت کیلئے خصوصی دعاء تقریب میں پاکستان کی ترقی و خوشحالی کے لئے خصوصی دعاؤں کا بھی اہتمام کیا گیا

محکمہ انسانی حقوق و اقلیتی امور کیجانب سے 90شاہراہ قائداعظم پر کرسمس کی تقریب کا انعقاد

لاہور: صوبائی محکمہ انسانی حقوق و اقلیتی امور کیجانب سے 90شاہراہ قائداعظم لاہور میں کرسمس کی مناسبت سے ایک خوبصورت تقریب کا انعقاد کیا گیا۔ جس میں گورنر پنجاب چوہدری محمد سرور،صوبائی وزیر اعجاز عالم آگسٹین، صوبائی وزراء،سیاسی و سماجی رہنماؤں،مختلف مذہبی قائدین اور مسیحی برادری نے خصوصی طور پر شرکت کی۔تقریب کا باقاعدہ آغاز تلاوت قرآن پاک سے کیا گیا جبکہ بائبل مقدس کی تلاوت بھی کی گئی۔تقریب میں میزبانی کے فرائض ڈپٹی ڈائریکٹر انسانی حقوق محمد یوسف نے سرانجام دیئے جبکہ ریورنڈ ڈاکٹر مجید ا یبل اورپاسٹر انور فضل نے ملک پاکستان کی سالمیت و خوشحالی کے لئے خصوصی دعاء کرائی۔

آرچ بشپ سبسچئین شا اور بشپ عرفان جمیل نے خصوصی خطاب کیا اور مسیحی برادری کو کرسمس کی اہمیت بارے بتایا۔ کرسمس کی مناسبت سے خصوصی گیت اور نظم جنگل بیل بھی تقریب کا حصہ تھی۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے گورنر پنجاب چوہدری محمد سرور نے مسیحی برادری کو کرسمس کی مبارکباد دیتے ہوئے کہاکہ اس بات میں کوئی شک نہیں کہ پاکستان مذہبی اقلیتوں کے لئے سب سے محفوظ ملک ہے جبکہ ہندوستان مذہبی اقلیتوں کے لئے سب سے زیادہ خطرناک ملک بن چکاہے۔ چودھری سرور نے کہا کہ حکومت نے قائداعظم محمد علی جناح کے ویژن کے مطابق پاکستان بھر میں تمام مذہبی اقلیتوں کو مکمل مذہبی آزادی فراہم کی ہے جبکہ تمام معاملات میں ان کی جان ومال کے تحفظ کو یقینی بنایا جارہا ہے۔

گورنر پنجاب نے مزید کہا کہ اقلیتوں کے خلاف بدترین دہشت گردی بھارت میں ہورہی ہے جس میں حکومت، فوج اور پولیس کے ساتھ ساتھ ان کی دیگر ایجنسیاں بھی شامل ہیں جبکہ نریندر مودی آر ایس ایس مشن کی قیادت کر رہے ہیں۔ انہوں نے مقبوضہ کشمیر میں جاری بربریت کی مذمت کی اور کہا کہ ہندوستان میں بسنے والی دیگر اقلیتوں، بشمول مسلمان، دن کی روشنی میں مارے گئے اور دنیا خاموش تماشائی بنی رہی، جو ایک ذلت ہے۔پارلیمانی سیکرٹری مہندر پال سنگھ نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کرسمس کے موقع پر پنجاب بھر میں سیکیورٹی کے سخت ترین انتظامات کیے جا رہے ہیں جبکہ مسیحی عبادت گاہوں سمیت دیگر اہم عوامی مقامات کا سیکیورٹی پلان تشکیل دیا جا چکا ہے تاہم مذہبی اقلیتوں سے درخواست ہے کہ اپنی عبادتگاہوں میں زیادہ رش نہ کریں اور سماجی فاصلہ برقرا ر رکھیں تاکہ کورونا کی وباء کو پھیلنے سے روکنے میں حکومت کے مدد گار بن سکیں۔

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے صوبائی وزیر اعجاز عالم آگسٹین نے تمام مسیحی برادری کو کرسمس کی مبارکباد دی  اور کہاکہ بلا شبہ حضرت عیسیٰ دنیا میں محبت اور امن کا پیغام لے کر آئے اور ان کی تعلیمات ہم سے تقاضہ کرتی ہیں کہ معاشرے میں باہمی یگانگت اور بھائی چارے کو فروغ دیا جائے۔انہوں نے کہاکہ تحریک انصاف کی حکومت کے دور اقتدار میں پاکستان بھر میں بسنے والی مذہبی اقلیتوں کو ہر میدان میں یکساں مواقع فراہم کیئے جارہے ہیں جیسا کہ مذہبی اقلیتوں سے منسلک قیدیوں کو دوران قید مسلمانوں کی طرز پر مخصوص مضامین پڑھائے جا سکیں گے، پنجاب بھر میں ہائر ایجوکیشن سے منسلک تمام تعلیمی اداروں میں مذہبی اقلیتوں کے لئے 2فیصد کوٹہ مختص کیا جا چکا ہے، مسیحی برادری کی شادیوں کو قانونی دائرہ کار میں لانے کیلئے 5سال مدت کے میرج لائسنس جاری کیے جا رہے ہیں جبکہ مسیحی قوانین کے تحت شادی و طلاق کی رجسٹریشن کے رولز کا مسودّہ بھی تیار کیا جاچکا ہے،جس پر مسیحی برادری سے مشاورت کا عمل جاری ہے۔

صوبائی وزیر نے مزید کہاکہ پنجاب حکومت نے اسکالر شپ کی گرانٹ کو 25ملین(اڑھائی کروڑ)سے 50ملین(پانچ کروڑ)تک بڑھادیا ہے جبکہ پنجاب سکلز ڈیویلپمنٹ فنڈز کے ذریعے دو سالوں میں 5000مذہبی اقلیتی طلباء کو مفت ہنر کی فراہمی کا عزم ہے۔تقریب سے صوبائی وزیر لائیو سٹاک حسنین دریشک، ایم پی اے سعدیہ سہیل، اعظمی کاردار، شہنیلا رتھ اور دیگر اہم شخصیات نے بھی خطاب کیااور اس بات پر اتفاق کیاکہ تحریک انصاف کے دور حکومت میں مذہبی اقلیتوں کو وہ تمام حقوق فراہم کیے جا رہے ہیں جن کا ذکر قائد اعظم کی تقاریر میں واضح طور پر جھلکتا ہے اور یقینی طور پر مملکت پاکستان کا ظہور اسی  لئے ہوا کہ اس میں بسنے والے تمام لوگ ایک آزا د اور محفوظ فضاء میں زندگی بسر کر سکیں۔تقریب کے اختتام پر سیکرٹری انسانی حقوق واقلیتی امور ندیم الرحمان نے تمام معزز مہمانوں کا شکریہ ادا کیا جبکہ گورنر پنجاب، صوبائی وزراء،مذہبی و سیاسی رہنماؤں نے ملکر مسیحی برادری کے سنگ کرسمس کا کیک بھی کاٹا۔