نواز شریف کی قائداعظم ثانی بننے کی خواہش دراصل ''قائداعظم سا نہیں '' کی حقیقت کا اظہار تھا: فیاض الحسن چوہان

 وزیراعظم کے متعلق گھٹیا ریمارکس دینے سے پہلے بیگم صفدر اعوان اپنے گریبان اور خاندان میں جھانک لیں:

نواز شریف کی قائداعظم ثانی بننے کی خواہش دراصل ''قائداعظم سا نہیں '' کی حقیقت کا اظہار تھا: فیاض الحسن چوہان

لاہور :  آٹھ دسمبر آر یا پار کا نعرہ لگانے والی اور گزشتہ کئی ماہ سے ملکی سیاست میں ہیجان پیدا کرنے کی کوشش کرنے والی پی ڈی ایم کے عزائم پر ان کے اپنے ہی بڑوں کی پندرہ دسمبر کی ملاقات نے خاک ڈال دی۔ اب پی ڈی ایم ''نہ خدا ہی ملا نہ وصال صنم'' کے مصداق نہ صرف استعفے نہیں دے رہے، بلکہ ضمنی اور سینیٹ الیکشن میں بھی حصہ لے رہے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار وزیر جیل خانہ جات پنجاب فیاض الحسن چوہان نے یونیک گروپ آف انسٹیٹیوٹس کے زیر اہتمام کرسمس کے حوالے سے ایک تقریب کے بعد ذرائع ابلاغ کے نمائندوں سے بات کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر انہوں نے کہا کہ گزشتہ روز مردان جلسے میں بیگم صفدر اعوان اور مولانا فضل الرحمن کو وزیراعظم عمران خان کے متعلق گھٹیا ریمارکس دینے سے پہلے اپنے گریبان اور خاندان میں جھانک لینا چاہئے۔ بیگم صفدر اعوان کے والد ستر کی دہائی کے اواخر اور اسی کی دہائی کے آغاز میں اپنے اور پورے پاکستان کے ہیرو عمران خان کی طرح کرکٹ ٹیم تک پہنچنے کے لیے ایک دفعہ ریلوے میں قلی اور ایک دفعہ سول ڈیفنس میں وارڈر سپاہی بھرتی ہوئے۔ انہوں نے کہا کہ مولانا شیرانی، حافظ حسین احمد اور مولانا شجاع الملک کے بیانات کے مطابق وزیراعظم عمران خان نہ صرف آئینی مدت پوری کریں گے بلکہ اگلے پانچ سال بھی وزیراعظم رہیں گے۔ انہوں نے کہا کہ جمہوریت کے علمبردار بننے والے پی ڈی ایم قائدین ملکی تاریخ کے شفاف ترین الیکشن، جسے یورپی یونین سمیت تمام بین الاقوامی مبصرین نے تسلیم کیا، سے انکاری ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ نوے کی دہائی میں نواز شریف کی قائداعظم ثانی بننے کی خواہش دراصل '' قائداعظم سا نہیں '' کی حقیقت کا اظہار تھا۔